معیشت دوبارہ زندہ ہو سکتی ہے لوگ نہیں، کرونا سے صورتحال امریکہ، یورپ سے بدتر ہونے کا خطرہ: بلاو ل بھٹو

معیشت دوبارہ زندہ ہو سکتی ہے لوگ نہیں، کرونا سے صورتحال امریکہ، یورپ سے بدتر ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اب تک وفاقی حکومت کرونا وائرس کے خلاف سست روی سے فیصلے کر رہی ہے اور لاک ڈاؤن کے لئے بھی کوئی ٹھوس فیصلہ کرنے میں ناکام نظر آتی ہے، ہم معیشت کو دوبارہ زندہ کر سکتے ہیں لیکن لوگوں کو دوبارہ زندہ نہیں کر سکتے۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں صورتحال امریکہ اور مغربی یورپ سے بھی بری ہو سکتی ہے کیونکہ پاکستان میں حفاظتی لباس اور طبی عملے کی کمی کے ساتھ ساتھ دیگر طبی آلات کی بھی کمی ہے۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ اس وباء کے پھیلنے کی ابتدا ہی سے ایک غلط احساس تحفظ کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ ہم اس حقیقت کو نظرانداز کر رہے ہیں کہ دنیا بھر میں یہ وباء کس قدر تیزی سے پھیل رہی ہے اور اس کا احساس نہ ہونے کی وجہ سے ہمیں بروقت ضروری اقدامات اٹھانے میں مشکلات پیش آرہی ہیں۔ اگر ہم صرف یہ امید کرنے لگیں کہ سب اچھا ہو جائے گا اور اپنی تیاری نہ کریں تو پاکستان بہت خاموشی سے ایک تباہی کی صورتحال کی طرف جاسکتا ہے جس کے شدید خطرناک مضمرات ہو سکتے ہیں۔

بلاول بھٹو

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) پیپلز پارٹی نے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کے ارکان پارلیمنٹ اور ٹکٹ ہولڈرز اپنے حلقوں میں امدادی پروگرام میں شامل ہوں، پارٹی کی تنظیمیں بشمول ملحقہ تنظیمیں لوگوں کی عزت نفس کو ملحوظ خاطر رکھ کر بھی یونین کونسلز محلہ گلی میں موجود نادار افراد اور غریب خاندانوں کی اپنا خاندان سمجھ کر مدد کریں۔انہوں نے کہا کہ کرونا وبا نے غریب نادار طبقہ کو بہت زیادہ متاثر کیا ہے۔ امدادی مہم میں کرونا وائرس کے خاتمے تک راشن تقسیم کئے جائیں اور مخیر حضرات سے بھی تعاون لیا جائے۔پیپلز پارٹی کے سیکرٹری جنرل نیئر بخاری کو فون پر ہدایات دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے بڑھتے معاشی انسانی مسائل کے حل اور غریبوں دیہاڑی دار مزدوروں کیلئے امدادی پروگرام مزید بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے نیر بخاری کو تمام پارٹی رہنماؤں اور ٹکٹ ہولڈرز سے رابطوں کی ذمہ داری بھی سونپ دی گئی اور بھرپور رابطوں اور امدادی سرگرمیوں کی باقاعدہ نگرانی کی ہدایت بھی کی۔

ہدایت

مزید :

صفحہ اول -