آشیانہ سکینڈل، ناجائز اثاثے کیس، احد چیمہ، شاہد رفیق کی درخواست ضمانت مسترد

آشیانہ سکینڈل، ناجائز اثاثے کیس، احد چیمہ، شاہد رفیق کی درخواست ضمانت مسترد

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ کے مسٹرجسٹس سردار احمد نعیم اور مسٹرجسٹس فاروق حیدر پر مشتمل ڈویژن بنچ نے سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد خان چیمہ کی ضمانت کی درخواستیں خارج کر دیں،احد خان چیمہ نے آشیانہ سکینڈل اور ناجائز اثاثہ جات کیس میں ضمانت کی درخواستیں دائر کررکھی تھیں،نیب کے پراسیکیوٹر فیصل بخاری کی طرف سے عدالت میں موقف اختیار کیا گیا کہ احد خان چیمہ کے نام 8 کنال اراضی کی ادائیگی پیراگون کے اکاؤنٹ سے کی گئی، احد خان چیمہ کے اثاثوں کی مالیت 47 کروڑ روپے سے زائد ہے جو ان کی آمدنی سے مطابقت نہیں رکھتے، نیب کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ احدخان چیمہ کی گرفتاری قانونی تقاضوں کے مطابق کی گئی،وہ ضمانت کے مستحق نہیں ہیں۔درخواست گزار کے وکلاء نے موقف اختیار کیا کہ ا اس کیس کے متعدد ملزموں کی ضمانتیں ہوچکی ہیں۔نیب کے پاس احد چیمہ کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ہے جبکہ احد چیمہ نیب کے تمام سوالات کے نہ صرف جواب دے چکے ہیں بلکہ اپنے حق میں ثبوت بھی نیب کو فراہم کرچکے ہیں۔لاہور ہائیکورٹ کے اسی ڈویژن بنچ نے آشیانہ ہاؤسنگ اقبال سکینڈل میں گرفتار ملزم شاہد رفیق کی ضمانت کی درخواست بھی خارج کردی،درخواست گزار کا موقف تھا کہ آشیانہ ہاؤسنگ اقبال سکینڈل کے تمام ملزمان ضمانت پر رہا ہو چکے ہیں،90 دن جسمانی ریمانڈ کے بعد جوڈیشل کیا گیا، جوڈیشل ہونے کے 3 ماہ بعد پھر گرفتاری ڈال دی، وہ ایک سال سے گرفتار ہے، عدالت سے استدعاہے کہ اس کی ضمانت کی درخواست منظور کی جائے،فاضل بنچ نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد مذکورہ بالاحکم جاری کردیا۔

مزید :

صفحہ آخر -