پنجاب گرینڈ ہیلتھ الائنس کی ہسپتالوں میں ناقص انتظامات کیخلاف احتجا ج کی دھمکی

پنجاب گرینڈ ہیلتھ الائنس کی ہسپتالوں میں ناقص انتظامات کیخلاف احتجا ج کی ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر)پنجاب گرینڈ ہیلتھ الائنس نے ہسپتالوں میں ناقص انتظامات کے خلاف احتجاج کی دھمکی دے دی، پنجاب میں صورتحال دیگر صوبوں کی نسبت بدترین ہے۔ان خیالات کا اظہار الائنس کے چیئرمین ڈاکٹر سلمان حسیب نے دیگررہنماؤں ارشد بٹ ودیگرکیساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملتان میں بڑھتے ہوئے کرونا وائرس کی فی الفور انکوائری کرواکر ذمہ داروں کا تعین کیا جائے۔ اگر دو روز میں ذمہ داران کا تعین نہ کیا گیا تو پنجاب بھر میں احتجاج کریں گے۔ڈاکٹرز اور نرسز میں کرونا کا گراف کسی بھی دوسرے صوبے کی نسبت پنجاب میں بہت زیادہ ہے، 60 کے قریب طبی عملہ کرونا کا شکار ہوچکا، 100 کے رزلٹ آنا ابھی باقی ہیں انہوں نے کہا کہ گجرات میں نرس صدف جمیل کرونا سے جاں بحق ہوئی۔ حکومت نے حقائق چھپانے کرونا ٹیسٹ نہیں کروا یا۔ ملتان میں 30 سے زائد ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈکس میں کرونا مثبت آیا ہے جبکہ 100 سے زائد عملے کی رپورٹ ابھی آنا باقی ہے۔انہوں نے کہا کہ چین سے آنے والے سامان کی انکوائری کروائی جائے کیونکہ ہمیں نہیں مل رہا۔ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر سلمان حسیب نے کہا کہ کرونا وارڈ میں ڈیوٹی ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے قوانین کے مطابق لگائی جائیں۔ حکومت فی الفور 5 سٹار ہوٹل اور پرائیویٹ ہسپتالوں کو نیشنلائز کر کے قرنطینہ بنائے۔انہوں نے کہا کہ ہم چیف جسٹس کے شکر گزار ہیں کہ انہوں نے ظفر مرزا کی کارکردگی کا نوٹس لیا جبکہ ہمارا مطالبہ ہے یاسمین راشد کی کارکردگی کا بھی نوٹس لیا جائے۔ماہ جون جولائی تک یہ وبا گئی تو 50 فیصد ڈاکٹرز متاثر ہوں گے۔کرونا وارڈ میں کام کرنے کیلئے جہاں پیرامیڈکس، نرسز اور ڈاکٹرز کو نوکریاں دی جا رہی ہیں۔ وہاں حکومت وقت کرونا سے نمٹنے کیلئے کوئی اچھا وزیر صحت بھی دیہاڈی پر رکھ لیتی تو شاید حالات بہتر ہوتے۔ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ تمام ایڈہاک، کنٹریکٹ اور ڈیلی ویجز کو فی الفور ریگولر کیا جائے۔ شازیہ تبسم نے کہا کہ پنجاب بھر میں سب سے زیادہ خطرہ نرسز کو ہے۔نرسز کیلئے کوئی بہتر اقدامات نہیں کئے گئے۔صدف جمیل کے خاندان کی مکمل کفالت حکومت اپنے ذمے لے۔حکومت تمام نرسز کو مکمل تحفظ فراہم کرے وزیر صحت بھی ایک خاتون اور ماں ہیں۔وہ دوسروں کے بچوں اور خاندانوں کا بھی خیال کرے۔

دھمکی

مزید :

صفحہ آخر -