حکومت تاجر برادری کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرے، ثمرہارون بلور

حکومت تاجر برادری کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرے، ثمرہارون بلور

  

پشاور(سٹی رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی ثمر ہارون بلور نے کہا ہے کہ حکومت تاجر برادری کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کریں ملاک ڈاون کی وجہ سے تاجر برادری کے اربوں روپے ڈوپ گئے ہیں،حکومت مارکیٹس کھولنے کے حوالے سے ایس او پیز جاری کریں اور اُس پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں،مستقل لاک ڈاون ہرگز مسئلے کا حل نہیں ہوسکتا۔ باچا خان مرکز پشاور سے جاری اپنے بیان میں ثمر ہارون بلور نے کہا کہ لاک ڈاون کی وجہ سے نہ صرف تاجر برادری کا معاشی نقصان ہورہا ہے بلکہ وہ ذہنی دباو کا بھی شکار ہے،حکومت اب ایس او پیز کے ساتھ مارکیٹس کھولنے کی اجازت دے دیں۔ثمر ہارون بلور نے کہا کہ انہوں نے جتنے بھی تاجر تنظیموں سے ملاقاتیں کیے ہیں اور اُن کو سنا ہے تو اُس کے بعد وہ اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ حکومت کو لاک ڈاون عارضی طو ر پر ختم کرکے مارکیٹس کھولنے چاہیے۔حکومت اس سلسلے میں اُن اساتذہ کو استعمال کرسکتی ہے جو موجودہ وقت میں گھروں میں بیٹھ کر تنخوائیں لے رہے ہیں،وہ اساتذہ بازاروں اور مارکیٹس میں سوشل ڈسٹنسنگ کو یقینی بنانے میں حکومت کا ساتھ دے سکتی ہے۔ ثمر ہارون بلور نے کہا کہ مارکیٹس اور بازاریں بند ہونے کی وجہ سے متوسط طبقے کا ہمت بھی اب جواب دے گئی ہے کیونکہ حکومت نے آج خود سپریم کورٹ میں تسلیم کیا ہے کہ انہوں نے اب تک صرف چودہ ہزار خاندانوں کو ملک بھر میں فوڈ پیکجز دیے ہیں،اگر ایک طریقہ کار کے ساتھ مارکیٹس کھل جائیں تو اُس سے نہ صرف تاجر برادری کے مسائل میں کمی آئیگی بلکہ عوام بھی کم سے کم معاشی طور پر متاثر ہوگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -