راہزنی کے دوران اے ایس آئی کو زخمی کرنے والے ملزمان گرفتار

راہزنی کے دوران اے ایس آئی کو زخمی کرنے والے ملزمان گرفتار

  

پشاور(کرائمز رپورٹر) کیپٹل سٹی پولیس پشاور نے خطرناک رہزن گروہ سے تعلق رکھنے والے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا، ملزمان نے کچھ روز قبل راہزنی کے دوران مزاحمت پر پولیس اہلکار کو زخمی کیا تھا، دونوں ملزمان کا تعلق پشاور سے ہے جنہوں نے ابتدائی تفتیش کے دوران راہزنی کے متعدد وارداتوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا ہے جن کے قبضے سے چھینے گئے موبائل فون فروخت کرنے کے عوض حاصل ہونے والے 16 ہزار روپے اور واردات میں استعمال ہونے والا اسلحہ بھی برآمد کر لیا گیا ہے، ملزمان سے مزید تفتیش جاری ہے جس کے دوران ان سے مزید اہم اور سنسنی خیز انکشافات کی توقع کی جا رہی ہے تفصیلات کے مطابق کچھ روز قبل نامعلوم راہزنوں نے پولیس اہلکار وقار حسین ولد غلام حسین سکنہ شگئی ہندکیان سے موبائل فون اور نقد رقم چھینی جبکہ مزاحمت پر فائرنگ کر کے اسے شدید زخمی کیا جس پر نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی گئی ایس ایس پی آپریشن ظہور بابر آفریدی نے واردات کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ایس پی رورل نجم الحسنین کی سربراہی میں خصوصی ٹیم تشکیل دے کر ملوث ملزمان کو گرفتار کرنے کا ٹاسک حوالہ کیا،ڈی ایس پی رورل رحیم حسین خان کی نگرانی میں تفتیشی ٹیم نے جدید سائنسی خطوط پر تفتیش جاری رکھتے ہوئے متعدد جرائم پیشہ اور مشکوک افراد کو شامل تفتیش کیا جس کے دوران ملوث اصل ملزمان کا سراغ لگا کر گزشتہ روز ایس ایچ او متھرا حسن خان نے دو ملزمان سید الرحمن ولد میرو سکنہ یکہ توت اور فیصل ولد اقبال سکنہ گلبہار نمبر 4 کو گرفتار کر لیا، دونوں ملزمان نے ابتدائی تفتیش کے دوران راہزنی کے متعدد وارداتوں میں ملوث ہونے کے ساتھ ساتھ دوران واردات مزاحمت پر پولیس اہلکار وقار حسین کو زخمی کرنے کا بھی اعتراف کر لیا ہے جن کے قبضے سے چھینے گئے موبائل فون فروخت کرنے کے عوض حاصل ہونے والی رقم 16 ہزار روپے اور واردات میں استعمال ہونے والا اسلحہ بھی برآمد کر لیا گیا ہے اسی طر ح دوسری کارروائی کے دوران ڈی ایس پی رورل رحیم حسین خان کی نگرانی میں ایس ایچ او تھانہ متھرا حسن خان نے دو ملزمان شیراز ولد ممتاز سکنہ متھرا اور محمد ضمیر ولد عبد الستار سکنہ دلہ زاک روڈ کو بھی گرفتار کر لیا ہے جنہوں نے ابتدائی تفتیش کے دوران راہزنی کے متعدد وارداتوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا، چاروں ملزمان سے مزید تفتیش جاری ہے جس کے دوران ان سے مزید اہم اور سنسنی خیز انکشافات کی توقع کی جا رہی ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -