مشکل کی اس گھڑی میں فرنٹ لائن پر ہیں، بلدیاتی ملازمین

مشکل کی اس گھڑی میں فرنٹ لائن پر ہیں، بلدیاتی ملازمین

  

پشاور (سٹی رپورٹر)بلدیاتی ملازمین نے ایک ماہ کی اضافی تنخواہ سمیت 3 فیصد ہائی رسک الاؤنس کی ادائیگی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشکل کی اس گھڑی میں بلدیاتی ملازمین اپنی جانوں کی پرواہ کئے بغیر فرنٹ لائن پر ڈیوٹی سرانجام دے رہے ہیں لیکن حکومتی سطح پر بلدیاتی ملازمین کی خدمات کو وہ پذیرائی نہیں مل رہی جس کے وہ حقدار ہیں انصاف کے تقاضوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اس تفریق کو ختم کرنا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرز فیڈریشن کے مرکزی وصوبائی صدر یونائٹیڈ میونسپل ورکرز یونین CBA/CBU سٹی ڈسٹرکٹ اینڈ آل ٹاؤنز پشاور کے چیئرمین ملک محمد نوید اعوان پشاور چیئرمین سوار خان تخت بھائی سرپرست اعلیٰ جاوید خان چارسدہ ظہیر شیخ جنرل سیکرٹری ایبٹ آباد رضاء اللہ خان نائب صدر بنوں ٗ بخت کریم خان ٗ محمد رزاق ٗ ڈاکٹر خالد محمود خان مینگورہ سوات ٗ ممتاز خان اوگی ٗ اشتیاق احمد مانسہرہ ٗ حاجی روشن خان ٗ حاجی حنیف خان ٗ سید گل امجد خان ٗ بلال احمد چیئرمین WSSP نائٹیڈ یونین ٗ شکیل ہاشم خیل ٗ رحمان علی خان ٗ مختیار خان ٗ نور گل ٗ سید وقار علی شاہ اور صلاح الدین نیازی اعظم گل نے اپنے ایک مشترکہ اخباری بیان میں کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ مشکل کی اس گھڑی میں جب حکومت بہ زور عوام کو لاک اپ کر رہی ہے لیکن ان مشکل حالات کے باوجود بلدیاتی ملازمین بغیر حفاظتی اقدامات کے شہر کی گلی گلی ٗ کوچہ کوچہ گھر گھر ہر چوک ہر بازار ہرسڑک پر عوام الناس کی خدمت پر مامور ہیں اگر تصور کر لیا جائے کہ عوام الناس کی طرح بلدیاتی ملازمین بھی ابھی ڈیوٹی چھوڑ کر گھروں میں لاک اپ ہو جائیں تو شہروں کا کیا حال ہو گا شہر گندگی سے اٹ جائیگا اور شہر میں کرونا کے ساتھ کئی قسم کی دیگر وبائی امراض پھیل جائیں گی جس کا تدارک حکومتوں کے بس سے باہر ہو گا ملازمین بمعہ فائر بریگیڈ سٹاف بے سروسامانی کے سپرے کی ڈیوٹی کر رہے ہیں اور خاص کر کرونا سے متاثرہ علاقوں میں جاکر سپرے کررہے ہیں لہٰذا بلدیاتی ملازمین جو معاشرے کے انتہائی پسماندہ طبقے اوراکثریت اقلیتوں سے تعلق رکھتی ہے کیلئے ایک ماہ کی اضافی تنخواہ اور 20فیصد ہائی رسک الاؤنس ماہ رمضان سے قبل ادا کیا جائے بصورت دیگر بلدیاتی ملازمین کسی مہم جوئی کا شکار نہ ہو جائیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -