اوپن پالیسی کے تحت رواں سال 158ارب روپے کی گندم خریدنے کا فیصلہ

  اوپن پالیسی کے تحت رواں سال 158ارب روپے کی گندم خریدنے کا فیصلہ

  

ملتان‘ بدھلہ سنت (سپیشل رپورٹر‘ نامہ نگار) صوبائی وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک نے کہا ہے کہ حکومت نے گندم کی خریداری کے لیے اوپن پالیسی کا اعلان کیا ہے۔کرونا وائرس کی وبا کے باعث دنیا بھر میں خوراک کی کمی کا خدشہ رد نہیں کیا جاسکتا۔ حکومت نے ملکی ضروریات کو مد نظر رکھ کر ٹارگٹ فکس کیا ہے جو بڑھایا بھی جا سکتا ہے۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار وفاقی پارلیمانی سیکرٹری مخدوم زین قریشی کے ہمراہ ضلع ملتان میں گندم خریداری کا افتتاح کے موقع پر گفتگو(بقیہ نمبر53صفحہ6پر)

کرتے ہوئے کیا جو بدھلہ سنت اور مخدوم رشید مراکز خریداری گندم پر کیا گیا۔اس موقع پرممبران صوبائی اسمبلی ملک واصف راں،ملک سلیم اختر لابر،اسسٹنٹ کمشنر صدر شہزاد محبوب اور ڈی ایف سی ممتاز ملک بھی موجود تھے۔وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک نے کہا کہکورونا وائرس کی وباء سے پوری دنیا کی معیشت کو دھچکا پہنچا ہے جس سیدنیا میں خوراک کی کمی کا خدشہ پیدا ہو سکتا ہے۔حکومت نے ملکی ضروریات کو مد نظر رکھ کرگندم خریداری کا ٹارگٹ فکس کیا ہے،یہ ہدف بڑھایا بھی جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ خوراک مختصر وقت میں خریداری کا ہدف حاصل کرنے کی کوشش کرے۔مخدوم زین قریشی نے کہا کہ حقیقی کسانوں اور کاشتکاروں کو باردانہ کے اجراء میں ترجیح دی جائے گی،میرٹ سے ہٹ کر باردانہ کی تقسیم برداشت نہیں کی جائے گی،حقیقی کسان اور کاشتکار کی حق تلفی نہیں ہونے دی جائے گی،گندم کی فصل پر کسان کے پورے سال کا گزر بسر انحصار کرتا ہے،کسان سے گندم کا ایک ایک دانہ خریدا جائے گا،مخدوم زین قریشی نے کہا کہ حکومت نے شہری علاقوں میں پیدا ہونیوالی آٹے کی مصنوعی قلت پر قابو پانے کی بھی حکمت عملی تیار کر لی ہے۔بعد ازاں صوبائی وزیر اور وفاقی پالیمانی سیکرٹری نے مرکز پر فیتہ کاٹ کر گندم خریداری کا افتتاح کیا۔افتتاح کے موقع پر کسانوں میں باردانہ بھی تقسیم کیا گیا۔ادھر حکومت پنجاب کی گندم خریداری مہم 2020-21کے تحت ضلع ملتان کے گندم خریداری مراکز پر کسانوں سے باردانہ کے حصول کیلئے درخواستوں کی وصولی کاسلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔اس ضمن میں حکومت پنجاب کی گندم خریداری پالیسی کے تحت ضلع ملتان کے 17گندم خریداری مراکز پر گندم کے کاشتکاروں سے باردانہ کے حصول کیلئے درخواستوں کی وصولی کا سلسلہ گزشتہ روز سے شروع کردیا گیا ہے۔ یادر رہے کہ حکومت پنجاب نے صوبہ بھر میں 382گندم خرید مراکز قائم کئے ہیں اور رواں سال 158ارب روپے کی گندم خریدنے کا فیصلہ کیا ہے ہر کاشتکار کو 500سے 1ہزار بوری یکمشت اور بلا رکاوٹ فراہم کی جائے گی کسی کسان کو کوئی شکایت ہو تو وہ فورا ضلعی،صوبائی سطح پر قائم شکایات سیل سے رابطہ کر سکتے ہیں۔

گندم /زین قریشی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -