ملتان سے مشتبہ مریضوں کو علی پور بھیج کر لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈالی جارہی ہیں‘ پی ایم اے مظفر گڑھ کا شدید ردعمل

  ملتان سے مشتبہ مریضوں کو علی پور بھیج کر لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈالی ...

  

جتوئی (نمائندہ پاکستان) پی ایم اے مظفر گڑھ اپنے تمام آفیسران، ڈاکٹرز و دیگر عملہ کی ان تھک اور شبانہ روز کوششوں کا اعتراف کرتے ہوئے ان کے لیے مزید دعا گو ہے(بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

ان خیالات کا اظہار پی ایم اے مظفر گڑھ کے صدر ڈاکٹر مقبول عالم اور جنرل سیکریٹری ڈاکٹر یوسف نسیم لغاری نے اپنے بیان میں کیا۔ انہوں نے کہا 60 بیڈز کے ہسپتال میں زبردستی 73 مشتبہ افراد ملتان سے لا کر داخل کرا دئیے۔ اور جب ان میں سے 14 مریض پازیٹیو نکل آئے تو ان پازیٹیو مریضوں کو تقریبا 5 دن علی پور تحصیل ہسپتال پر رکھنے کے بعد انھیں طییب اردگان شفٹ کیا۔اس دوران ڈی ایچ او مظفرگڑھ نے طے شدہ پازیٹو

کیس شفٹنگ پروٹوکول پر عمل کرنے کے لیے موصوف اے سی کو بار بار یاددہانی کرائی تا کہ ھسپتال میں آنے والے دیگرلوگوں کیلئے خطرناک ہیں تو پی ایم اے مظفر گڑھ اس سلسلے میں اعلی حکام سے مطالبہ کرتی ہے کہ ملتان سے مشتبہ مریضوں کو علی پور لا کر اور کرونا کے کنفرم مریضوں کو بلا وجہ پانچ دن علی پور تحصیل ہسپتال پر رکھنے اور شفٹنگ پروٹوکول پر عمل نہ کر کے عوام کی زندگی کو خطرے میں ڈالنے پر حکام کیخلاف انکوائری کروائی جائے۔

ردعمل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -