چینی شہری کورونا وائرس کے دوران کیا کام کرتے رہے؟سروے نے بھانڈا ہی پھوڑ دیا

چینی شہری کورونا وائرس کے دوران کیا کام کرتے رہے؟سروے نے بھانڈا ہی پھوڑ دیا
چینی شہری کورونا وائرس کے دوران کیا کام کرتے رہے؟سروے نے بھانڈا ہی پھوڑ دیا

  

بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)ایک سروے کے مطا بق چین کے شہریوں نے گزشتہ 2 ماہ کے دوران گزشتہ سالوں کے اسی عرصہ کی نسبت اوسطا زیادہ فلمیں دیکھی ہیں کیونکہ انہوں نے نوول کروناوائرس کی وبا کے باعث زیادہ وقت گھر میں گزارا۔

فلموں کے بڑے ڈیٹا بیس چائنہ فلم ایسوسی ایشن اور ٹکٹنگ کے ادارے مایان کی جانب سے کئے گئے سروے کے مطابق 1ہزار530جواب دہندگان میں سے ہر کسی نے مارچ کے دوران سینما سے باہر اوسطا 6فلمیں دیکھیں جبکہ فروری میں یہ تعداد7تھی۔سروے میں کہا گیا ہے کہ نتائج اس طرف اشارہ کرتے ہیں کہ لوگوں کی جانب سے آن لائن یا ٹی وی پر فلم بینی میں اضافہ ان کی دیکھنے کی عادت کو فروغ دے گا۔علاوہ ازیں 70فیصد سے زائد جواب دہندگانوں نے آن لائن فلمیں دیکھنے کیلئے ادائیگی کی، یہ فلم بینوں میں تیزی سے بڑھتا ہوا مقبول رجحان ہے۔چونکہ چین میں وبا میں بہتری کا رجحان جاری ہے اس لئے مزید لوگ سینما میں فلمیں دیکھنے کے منتظر ہیں،34فیصد کا کہنا ہے کہ ان کی توقعات بہت زیادہ ہیں۔اگر سینما میں وبا سے حفاظت کے مناسب اقدامات ہوتے ہیں اور ٹکٹس پر بھی رعایت ملتی ہے تو سروے میں شامل 60فیصد کے قریب لوگ سینما جانے پر زیادہ رضامند ہوں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -