ٹرائل میں تاخیر‘سابق ڈی جی ایل ڈی اے کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم 

 ٹرائل میں تاخیر‘سابق ڈی جی ایل ڈی اے کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے ٹرائل میں تاخیر کی بنیادپر ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کو  ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے اور قرار دیا کہ ملزم کو پراسیکیوشن کے رحم و کرم پر چھوڑ نہیں چھوڑا جاسکتا لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سرفراز ڈوگر کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے احد چیمہ کی درخواست ضمانت پر سات صفحات پر مشتمل تحریری حکم جاری کیا۔فیصلہ میں قرار دیا کہ ملزم کو غیر معینہ عرصے کیلئے پراسیکیویشن  کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا عدالت نے فیصلہ میں نشاندہی کی کہ ریفرنس کی سماعت 66 مرتبہ التواء کا شکار ہوئی جس میں پراسیکیویشن نے 24 مرتبہ التواء کی  استدعا کی. عدالت نے قرار دیا کہ  احتساب عدالت کے آرڈر شیٹ سے تاخیر کے زمہ دار دونوں فریق ہیں عدالت نے قرار دیا کہ غیر ضروری تاخیر پر عدالتی فیصلے موجود ہیں۔اور عدالتی فیصلوں کی نظیر میں تاخیر ضمانت کا بہترین جواز ہے.  فیصلے میں باور کرایا گیا کہ ریفرنس میں تاخیر عدالتی کاروائی درست عمل نہیں ہے۔عدالت نے ہدایت کی کہ احد چیمہ کو پچاس پچاس لاکھ کے دو مچلکے جمع داخل کرائیں۔ دوسری جانب احتساب عدالت نے سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کی رہائی کا پروانہ جاری کردیا احتساب عدالت کے ڈیوٹی جج اسد علی نے آشیانہ اور آمدن سے زائد اثاثہ جات ریفرنس میں روبکار جاری کی عدالت نے ضمانتی مچلکوں کومنظور کرنے کے بعد روبکار جاری کی احد چیمہ کی جانب سے رانا راشد منہاس،کرامت بھٹی کی جانب سے ضمانتی مچلکے جمع کروائے گئے احد چیمہ کو فروری 2018 کو آشیانہ ریفرنس میں گرفتار کیا گیا تھا پولیس اہلکار احد چیمہ کی رہائی کی روبکار لیکر سینٹرل جیل روانہ ہوگیا احد چیمہ سروسز ہسپتال میں زیر علاج ہونے کے باعث رہائی ہسپتال سے ہوگی احد چیمہ کیمپ جیل میں زیر علاج تھے۔احد چیمہ تین سال دو ماہ نیب کے مختلف کیسز میں جیل میں رہے۔

احد چیمہ 

مزید :

صفحہ آخر -