رمضا ن بازاروں میں سبسڈی والی اشیاء کی قلت، شہری پریشان، بغیر خریداری گھروں کو واپسی

        رمضا ن بازاروں میں سبسڈی والی اشیاء کی قلت، شہری پریشان، بغیر ...

  

لاہور(افضل افتخار)حکومت کی جانب سے عوام کیلئے صوبہ بھر میں قائم کیے جانیوالے 313 رمضان بازاروں میں اشیاء ضروریہ نایاب ہو گئیں جبکہ شہریوں کا استقبال خالی سٹالز نے کیا جہاں نا آٹا مہیا تھا نا چینی۔تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت لاہور میں عوام کی سہولت کے لئے صوبائی حکومت کی جانب سے رمضان بازاروں کا آغاز ہوگیا جس میں عوام کی بڑی تعداد خریداری کے لئے پہنچ گئی مگر حکومتی اعلانات کے باوجود عوام کو مختلف اشیاء پر دی گئی سبسڈی نظر نہیں آئی اور نہ ہی مکمل اشیاء دستیاب ہیں جس سے عوام کو خریداری میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا لاہور شہر میں رمضا ن بازار تو کھل چکے ہیں مگر یہاں پر عوام کو بنیادی اشیاء کی عدم دستیابی نظر آرہی ہے خاص طور پر چینی اور آٹا کی قلت دیکھنے میں آئی اس کے علاوہ دیگر کئی اور اشیاء بھی دستیاب نہیں ہیں رمضان بازار بڑے بڑے تو قائم کردئے گئے ہیں مگر عوام کے عام استعمال کی اشیاء کی مکمل فراہمی دستیاب نہیں ہے سٹالز خالی نظر آرہے ہیں جبکہ جو اشیاء موجود ہیں ان کی بھی قیمتوں میں کوئی خاص فرق نظر نہیں آرہا اور نہ ہی یہ اشیاء معیاری درجہ اول کی ہیں۔اس حوالے سے جب ڈی سی لاہور مدثر ریاض سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ چینی کی دستیابی کا جائزہ لیا گیا ہے چینی وافر مقدار میں موجود ہے جبکہ آٹا کی فراہمی کا جائزہ لیا گیا ہے۔ڈی سی لاہور مدثر ریاض نے کہا کہ آٹا اور چینی کی خریدوفروخت جاری تھی اور شہری آٹا اور چینی خرید رہے تھے۔ لاہور میں قائم رمضان بازاروں میں خریداری کرنے کے لئے آنے والے افراد کو شدید مایوسی کا سامنا ہے بازاروں میں دعوؤں کے باوجود ضروری ساما ن کی عدم دستیابی کے باعث عوا م کی بڑی تعداد بغیر خریداری ہی واپس جارہی ہے اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے ناصر، جنید، پرویز، عادل، راجہ شہزاد، سہیل، ضمیر خان، حمید علی، حسنین بخاری، عابد خان، سلمی بیگم، نائلہ، صائمہ، شمائلہ، زبیر، عاصم، آصف،زنبیر، شرجیل خان، وسیم علی، عادل، شوکت اور عامرعلی نے کہا کہ حکومت نے عوام کو رمضان بازاروں میں اشیاء کی سستی فراہمی کے دعوے تو بہت کئے مگر افسوس عملی طور پر کچھ بھی نہیں ہے چینی اور آٹا سمیت جن چیزوں پر سبسڈی دی گئی وہ دستیاب ہی نہیں ہے جس سے پریشانی کا سامنا ہے حکومتی کاوشیں ناکام نظر آتی ہیں مزید کہا کہ جو اشیاء دستیاب ہیں وہ بھی مہنگے داموں فروخت کی جارہی ہیں عام بازار میں بھی یہ اشیاء  ان ہی قیمت پر مل جاتی ہے حکومت کو اس حوالے سے عملی طور پر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔

رمضان بازار

مزید :

صفحہ اول -