بنوں، گیس لیکج سے آتشزدگی، 2بچے جاں بحق، 3خواتین جھلس گئیں 

بنوں، گیس لیکج سے آتشزدگی، 2بچے جاں بحق، 3خواتین جھلس گئیں 

  

 پشاور (سٹی رپورٹر)بنوں محکمہ سوئی گیس کی مبینہ غفلت کے باعث دو کمسن بچے جان سے ہاتھ دو بیٹھے جبکہ ایک ہی گھر کی تین خواتین اگ میں بری طرح جھلس گئی جنکا علاج معالجہ جاری  ہے تاہم واقعہ کی نہ مقامی پولیس اور نہ ہی ایل ار ایچ ہسپتال اور برن سینٹر میں کوئی روزنامچہ درج کیا گیا ہے جبکہ محکمہ سوئی گیس نے کوئی بھی نوٹس نہیں لیا متاثرہ شخص نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا  اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ گیس پائپ لائن کے نتیجے میں ہونیوالے دھماکے  ذمہ داران محکمہ سوئی گیس کے اہلکاروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے اور واقعہ کی مکمل اور شفاف تحقیقات کر کے ہمیں انصاف فراہم کیا جائے پشاور پریس کلب میں بنوں کے سے تعلق رکھنے والے متاثرہ شخص محمد سبحان  اور شاہد اللہ نے دیگر رشتہ داروں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ بنوں کے علاقہ محلہ جوگیان جھگڑا میں کرایہ کا مکان لیا تاہم گھر کیساتھ گیس پائپ لائن تھی جو نالہ کے قریب ہونے کی وجہ سے زنگ الودہ ہو چکا تھا اور پ گیس لیک ہوتی تھے جسکے خلاف اہلیان علاقہ نے بھی متعدد بار جنوری0 202اور مارچ2020میں مختلف اوقات میں شکایت بھی درج کی تھی جسکو محکمہ سوئی گیس نے پائپ لائن کی مرمت کرنے کیلئے از خود نوٹس بھی لیا اور پائپ لائن لیکج کے حوالے سے ذمہ داران کو با خبر بھی رکھا لیکن پھر بھی پائپ لائن مرمت نہیں کی گئی تاہم 3مارچ 2021 کو پائپ لائن لیکج کے باعث گیس جمع ہوگیا اور اچانک اگ بھڑک اٹھی اور اگ کے شعلوں نے ہمارے مکان کو اپنی لپیٹ میں لیا جسکے نتیجہ میں دو بچے جنکی عمریں گیارہ سال اور چھ سال ہے جاں بحق ہوئے جبکہ تین خواتین بری طرح جھلس گئی جنکو علاج معالجہ کیلئے پشاور پہنچایا گیا انہوں نے کہا کہ بچوں کی تدفین کے بعد جب ہم نے ایل ایر ایچ ہسپتال  سے معلومات  ھاصل کی تو اس حوالے سے کوئی رپورٹ درج نہیں کی گئی تھی جو پولیس کی بھی غفلت کا نتیجہ ہے جبکہ اب خواتین کے علاج معالجہ پر بھی کافی خرچہ ہو رہا ہے اور گھر کا مالک بھی نقصان مانگ رہا ہے اس سارے واقعہ کی ذمہ داری محکمہ نادرن سوائی گیس حکام پر عائد ہوتی ہے اور اب بھی مذکورہ پائپ لائن تبدیل نہیں کیا گیا جسکی وجہ سے علاقہ مکین گیس سے محروم ہے متاثرہ شخص نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا اور محکمہ نادرن سوئی گیس حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ہمیں انصاف فراہم کیا جائے،محکمہ سوئی گیس کے ذمہ داران کے خلاف غفلت برتنے پر کارروائی عمل میں لائی جائے اور ہمارے جانی اور مالی نقصان کا ازالہ کیا جائے بصورت دیگر عدالتوں سے رجوع کرنے پر مجبور ہونگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -