پشاور میں پاکستان کا پہلا اینویٹیو پارک کا قیام

پشاور میں پاکستان کا پہلا اینویٹیو پارک کا قیام

  

پشاور (سٹاف رپورٹر) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر برائے سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی ضیاء اللہ بنگش نے محکمہ سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی خیبرپختونخوا کی جانب سے بنائے جانے والے پاکستان کے پہلے اینویٹیوپارک کا دورہ کیا اور پارک میں جاری کام کا معائنہ کیا اور افسران کو ہدایات جاری کیے. ڈائریکٹر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی خالد خان نے پاکستان کے پہلے اینویٹیوپارک قائم کرنے کے لیے اب تک کی پیش رفت پر بریفنگ دی محکمہ سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی خیبرپختونخوا کے پی 4.0 پالیسی کے تحت خیبرپختونخوا میں پاکستان کا پہلا اینویٹیو پارک بنا رہی ہے جہاں ڈائریکٹوریٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، کری ایٹیو اینویٹو یونٹ سمیت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سیکٹر کے تمام دفاتر ہوں گے خیبرپختونخوا کابینہ نے کچھ عرصہ قبل کے پی 4.0 کی منظوری دی تھی جس کے تحت پشاور میں اسٹیٹ آف دی آرٹ پاکستان کا پہلا اینویٹیو پارک قائم کیا جا رہا ہے. خیبرپختونخوا حکومت ڈیجییٹل پاکستان وژن کو عملی جامہ پہنانے کی جانب تیزی سے گامزن ہے، ٹیکنالوجی سیکٹر کے فروغ کے لیے اینویٹیو پارک بڑا منصوبہ ہے. اس موقع پر ضیاء اللہ بنگش کا کہنا تھا کہ خیبرپختونخوا 4.0  Connecting The Dots نوجوانوں کو سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سیکٹر میں بہترین مواقع فراہم کرنے کے لیے اہم منصوبہ ہے، پشاور میں پاکستان اینوویشن پارک کے قیام سے ملک بھر بالخصوص خیبرپختونخوا کے ریسرچرز، سائنسدانوں، ٹیکنالوجسٹ، بزنس مین، اینوویٹرز اور اسٹارٹ اپس کو ایک بہترین پلیٹ فارم ملے گا. انہوں نے کہاکہ منصوبے پر کام تیزی سے جاری ہے پاکستان اینویٹیو پارک کا افتتاح جلد کیا جائے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -