ماحولیاتی آلودگی پریشان کن لیکن اس میں اضافہ امیر کررہاہے یا غریب طبقہ؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

ماحولیاتی آلودگی پریشان کن لیکن اس میں اضافہ امیر کررہاہے یا غریب طبقہ؟ جواب ...
ماحولیاتی آلودگی پریشان کن لیکن اس میں اضافہ امیر کررہاہے یا غریب طبقہ؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا
سورس: Pxhere (creative commons license)

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ایلن مسک اور بل گیٹس جیسے کھرب پتی افراد اکثر ماحولیاتی آلودگی سے دنیا کو متنبہ کرتے رہتے ہیں اس کے خاتمے کے لیے اقدامات کرنے کی ہدایت کرتے ہیں لیکن اب دنیا سے غربت کے خاتمے کے لیے کام کرنے والے عالمی ادارے آکسفیم ، سٹاک ہوم انوائرنمنٹ انسٹیٹیوٹ اور برطانوی ادارے کیمبرج سسٹین ابیلٹی کمیشن نے ایک ایسی رپورٹ جاری کی ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔

 میل آن لائن کے مطابق اس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ 25سالوں میں فضاءمیں کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج میں 60فیصد اضافہ ہوا ہے اور اس کی دوگنا ذمہ دار ایک فیصد امیرترین آبادی ہے۔ماہرین نے بتایا ہے کہ دنیا کے امراءجو مجموعی طور پرآبادی کا ایک فیصد سے بھی کم بنتے ہیں، وہ دنیا کی غریب آبادی سے دوگنا زیادہ کاربن ڈائی آکسائیڈ فضاءمیں شامل کرنے کے ذمہ دار رہے۔یہ امراءایسی اشیاءاور سفر کے ایسے ذرائع استعمال کر رہے ہیں جو کاربن ڈائی آکسائیڈ کا زیادہ اخراج کرتے ہیں اور کاربن بجٹ کا بڑا حصہ یہ لے جاتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق 1990ءسے 2015ءتک کے 25برسوں میں کاربن بجٹ کا ایک تہائی ان ارب پتی افراد نے استعمال کیا جو سفر کے لیے اپنی ذاتی جہاز استعمال کرتے ہیں۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ پروفیسر پیٹر نیویل کا کہنا ہے کہ ”امیر لوگ سمجھتے ہیں کہ وہ ہوائی جہازوں میں بکثرت سفر کرکے جو کاربن ڈائی آکسائیڈ فضاءمیں شامل کر رہے ہیں، انہیں وہ شجرکاری کی چند مہمات چلا کر ختم کر لیں گے۔ ان کا یہ خیال تاحال کسی حوالے سے درست ثابت نہیں ہو سکا اور فضاءمیں کاربن ڈائی آکسائیڈ کی شرح مسلسل بڑھتی جا رہی ہے۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -