امریکہ نے ایران پر حملے کیلئے اسرائیل کا ساتھ دینے سے کیوں انکار کیا ؟ اسرائیلی ویب سائٹ نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا 

امریکہ نے ایران پر حملے کیلئے اسرائیل کا ساتھ دینے سے کیوں انکار کیا ؟ ...
امریکہ نے ایران پر حملے کیلئے اسرائیل کا ساتھ دینے سے کیوں انکار کیا ؟ اسرائیلی ویب سائٹ نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

تل ابیب (ڈیلی پاکستان آن لائن )امریکی میڈیا نے دعویٰ کیاہے کہ صدر جوبائیڈن  نے ایران پر حملے کیلئے اسرائیل کا ساتھ دینے سے صاف انکار کر دیاہے جس کی وجہ  ایران کی امریکی بیسز کو نشانہ بنانے کی دھمکی کو قرار دیا جارہا ہے۔
اسرائیل ٹائمز نے دعویٰ کیاہے کہ ایران کی افواج کے چیف آف سٹاف میجر جنرل محمد باقری نے  ٹی وی چینل کو انٹرویو کے دوران اسرائیل کو دھمکی دی کہ اگر اس نے جوابی کارروائی کی تو اگلا حملہ اس سے بھی زیادہ سخت اور طاقتور ہو گا اور مزید کہا کہ امریکہ کو بھی خبردار کرتے ہیں کہ وہ اسرائیل کے ملٹری ایکشن کی پشت پناہی نہ کرے۔
محمد باقری کا کہناتھا کہ اگر امریکہ نے اسرائیل کے جوابی حملے میں مدد کی تو پھر امریکی بیسز کو نشانہ بنایا جائے گا، پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر حسین سلامی نے بھی دھمکی دی کہ تہران اپنے مفادات، حکام یا شہریوں پر کسی بھی اسرائیلی حملے کا جواب دے گا۔

دوسری جانب امریکہ نے بھی اسرائیلی وزیراعظم کو صاف جواب دیدیا ہے کہ وہ ایران کے خلاف کسی بھی جارحانہ آپریشن کا حصہ نہیں بنے گا۔
یاد رہے کہ گزشتہ شب ایران کی جانب سے اسرائیل پر 300 سے زائد میزائل اور ڈرونز داغے گئے جسے امریکہ نے اپنے دفاعی سسٹم سے ناکارہ بنانے کا دعویٰ کیا ہے ۔ ایران کی جانب سےیہ حملہ دمشق میں ایرانی قونصل خانے کو اسرائیل کی جانب سے نشانہ بنائے جانے کے جواب میں کیا گیاہے ۔
اس سے قبل گزشتہ روز ایران نے اسرائیلی ارب پتی کا بحری جہاز بھی قبضےمیں لیتے ہوئے ایران منتقل کر دیا تھا جس پراسرائیل اور امریکہ کی جانب سے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی گئیں ۔؎