آرزوئیں ۔۔۔یہ کتنی طاقتور ہوتی ہیں

آرزوئیں ۔۔۔یہ کتنی طاقتور ہوتی ہیں
آرزوئیں ۔۔۔یہ کتنی طاقتور ہوتی ہیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

( نثری نظم )

کبھی کبھی 
میں سوچتا ہوں 
یہ آرزوئیں 
یہ خواب
یہ تمنائیں 
یہ امنگیں 
کہاں پیدا ہوتی ہیں
کیوں پیدا ہوتی ہیں
زندگی میں
ان کے ضرورت کیا ہے 
میں سوچتا ہوں 
یہ کتنی طاقتور ہوتی ہیں
کہ نہ ہوں 
اگر پوری 
تو 
زندگی کو ناکارہ کردیتی ہیں
میں سوچتا ہوں 
کہ 
میں پہنچ جاؤں 
ذہن کے اس گلستاں میں
جہاں یہ فصلیں اگئی ہوئی ہیں
اور پوچھوں 
باغبان سے 
وہ کیوں اگاتا ہے 
ایسی فصلیں 
جن کی قیمت 
پوری زندگی اتارنی پڑتی ہے
مگر جب
باغبان ملتا ہے 
تو میں حیران ہوں 
کہ 
اس کی شکل ہو بہو میری طرح ہے
مجھے ادراک ہوتا ہے 
یہ فصلیں تو میں نے خود لگائی ہیں
میں سوچتا ہوں
کب اور کیسے 
ان کا بیج میں نے بویا تھا

کلام :ڈاکٹر محمد کلیم

مزید :

شاعری -