’’ باغی ‘‘آزادی مارچ میں شرکت کیلئے راضی،مارشل لاء میری لاش سے گزرکر آسکتاہے ، جاوید ہاشمی

’’ باغی ‘‘آزادی مارچ میں شرکت کیلئے راضی،مارشل لاء میری لاش سے گزرکر ...


ملتان (خصوصی رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی صدر مخدوم جاوید ہاشمی آزادی مارچ میں شرکت لے لئے راضی ہو گئے ہیں،انہوں نے کہا ہے کہ جمہوریت میرے ایمان کا حصہ ہے غیر جمہوری عمل کا حصہ ہرگز نہیں بن سکتا ، عوام کے حقوق جمہوریت کے ذریعے ملنے پر ہی یقین رکھتا ہوں ، پاکستان کو بہت سے مسائل کا سامنا ہے اورمسائل کے حل کیلئے بھی جمہوریت ضروری ہے ، سپریم کورٹ ہو یا جرنیل ان کو یہ حق نہیں دے سکتے ہیں کہ وہ ملک چلائیں اور ہمارے مسائل کا حل نکالیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز ملتان واپسی پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ جمہوریت کی پاسبانی کرنا میری سیاست کا بنیادی حصہ ہے اور یہ میرا وعدہ ہے کی کسی طابع آزما کو یہ اجازت نہیں دی جا سکتی ہے کہ وہ بیس کروڑ عوام کے حقوق غضب کرے ، ملک میں مارشل لاء میری ڈیڈ باڈی پر تو آسکتا ہے پہلے اپنی جان کا نذرانہ پیش کروں گا کیونکہ پاکستان کو مارشل لاؤں نے برباد کیا ہے جمہوریت سے ہٹ کو کوئی بھی راستہ پاکستان کیلئے بہتر نہیں ہو سکتا ہے ، چےئرمین عمران خان مجھ سے مشاورت کرتے ہیں اور اختلاف رائے بھی ہوتا ہے تاہم اس معاملے پر میرا پہلے دن سے اختلاف رہا ہے۔ ایک سوال پر مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ بعض چینلز خبریں دے رہے ہیں کہ میرے شاہ محمود یا پارٹی کے ساتھ کچھ مسائل ہیں یامجھے پارٹی میں شاہ محمود سے کم اہمیت دی جارہی ہے ان میں کوئی صداقت نہیں ہے ، شاہ محمود سے میرے اچھے تعلقات ہیں ، علامہ طاہر القادری کیساتھ میں پڑھتا رہا ہوں اور میری کسی سے ذاتی دشمنی نہیں ہے ۔ موجودہ صورتحال میں سوچ کے عمل سے گزرنا چاہتا ہوں اس لئے اپنے حلقہ میں واپس آیا ہوں تاکہ ساتھیوں سے مشاورت کر سکوں ، میں پی ٹی آئی چھوڑنے کیلئے عوام سے مشاورت کرنے نہیں آیا ہوں ، ملتان سفر کے دوران میری کسی سے بات نہیں ہوئی ہے۔ جبکہ پی ٹی آئی کے وفد کی آمد سے قبل مخدوم جاہد ہاشمی میڈیا سے دوبارہ گفتگو کی جس میں انہوں نے کہا کہ میں کوئی بھی کام اپنے حلقے کی عوام سے مشاورت کے بغیر نہیں کرتا آئندہ کا لائحہ عمل کچھ دیر تک بتاؤں گا ، آنیوالے وفدکا اپنا گھر ہے اور جب جی چاہیں آئیں ان کو سر آنکھوں پر بٹھایا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول