کم عمر بچوں کے لئے کمپیوٹر، موبائل انتہائی خطرناک

کم عمر بچوں کے لئے کمپیوٹر، موبائل انتہائی خطرناک
کم عمر بچوں کے لئے کمپیوٹر، موبائل انتہائی خطرناک

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) کمپیوٹر اور موبائل ٹیکنالوجی کے عام ہوجانے کے بعد ننھے بچے بھی موبائل فون پر گیم کھیلتے نظر آتے ہیں لیکن ماہرین صحت نے خبردار کیا ہے کہ ان آلات کے مضر صحت اثرات کی وجہ سے 12 سال سے کم عمر بچوں کے اس ٹیکنالوجی پر استعمال کو ممنوع قرار دینا ضروری ہوگیا ہے۔ امریکن اکیڈمی آف پیڈی ایٹرکس اور کینیڈین سوسائٹی آف پیڈی ایٹرکس کا کہنا ہے کہ لیپ ٹاپ، ٹیبلٹ کمپیوٹر اور موبائل فون جیسے آلات سے نکلنے والی شعاعیں بچوں کیلئے خصوصی طور پر مضر ہیں اور تجویز دی ہے کہ 2 سال سے کم عمر بچوں کو ان آلات سے مکمل طور پر دور رکھنا چاہیے، جبکہ 3 سے 5 سال تک کے بچے زیادہ سے زیادہ 1 گھنٹے اور 6 سے 18 سال تک کے افراد روزانہ 2 گھنٹے سے زائد ان آلات کا استعمال نہ کریں۔

ماہرین نے بتایا کہ ان آلات کے استعمال سے ننھے بچوں میں دماغ کا سائز بے قاعدہ ڈھنگ سے بڑھنے لگتا ہے جس کی وجہ سے یادداشت کمزور اور سیکھنے کی صلاحیت متاثر ہونے کے علاوہ ذہنی تناﺅ جیسی بیماریاں پیدا ہوتی ہیں۔ جدید الیکٹرانک آلات کے استعمال سے بچوں میں نشوونما متاثر ہوتی ہے۔ موٹاپے کی بیماری جنم لیتی ہے اور نیند کے مسائل بھی پیدا ہوجاتے ہیں۔ ذہنی بیماریاں بھی اس ٹیکنالوجی کے استعمال کا اہم نتیجہ ہیں جن کی وجہ سے جارہنہ رویہ، ڈینشیا اور بعد میں نشہ کی لت پڑنے کا بھی خدشہ پیدا ہوجاتا ہے۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن بھی موبائل فون کی شعاعوں کو درجہ 2B کا خطرہ قرار دے چکی ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ ان کے حد درجہ اثرات کی صورت میں کینسر بھی ہوسکتا ہے۔

مزید : تعلیم و صحت