موبائل فون نے قاتل پکڑوا دیا

موبائل فون نے قاتل پکڑوا دیا
موبائل فون نے قاتل پکڑوا دیا

  

شکاگو (نیوز ڈیسک) امریکہ میں ایک لڑکی کی وجہ سے اپنے ساتھی طالب علم کو قتل کرنے والے کے موبائل فون نے جرم کے اہم ترین رازوں سے پردہ اٹھادیا اور قاتل کے جھوٹے بیانات کا پردہ فاش کردیا۔ بیس سالہ پیڈرو براوو اور اس کا ساتھی طالب علم کرسٹین ایگیلار ہاسٹل کے ایک ہی کمرے میں مقیم تھے۔ پیڈروو کو جب معلوم ہواکہ اس کا دوست کرسٹین اس کی سابقہ محبوبہ ایرکا ساتھ میل جول رکھتا ہے اور ان کے درمیان محبت کا تعلق پیدا ہوچکا ہے تو حسد سے بے قابو ہو کر اسی نے اپنے دوست کو قتل کردیا۔ اس نے کرسٹین کی لاش چھپانے کیلئے اپنے آئی فون پر موجود ڈیجیٹل مدد گار سروس سری (Siri) کا استعمال کیا اور سوال کیا کہ وہ ایک لاش کو کیسے چھپا سکتا ہے سری سے اس کے سوالات و جوابات کا دلخراش سلسلہ اب پولیس کے سامنے آچکا ہے، فون کے ریکارڈ سے معلوم ہوا کہ اس نے یہ سوالات اسی روز کئے تھے جس روز اس کا دوست لاپتہ۔ یہ بھی معلوم ہوا کہ اس نے اس رات ساڑھے گیارہ بچے کے دوران اپنے فون کی فلیش لائٹ نو دفعہ استعمال کی۔ اب یہ بھی ثابت ہوگیا ہے کہ دراصل وہ اس کا استعمال دوست کی لاش کو جنگل میں چھپانے کے دوران کرتا رہا۔ سراغ رسانوں نے سارے حاصل کرنے کے بعد عدالت میں پیش کردئے جس پر اسے قتل کا مجرم قرار دے دیا گیا ہے۔

  •  

مزید : جرم و انصاف