وکٹ پریونس خان نے راج کیا،یاسرشاہ شکنجہ کس چکے ،فتح یقینی ہے

وکٹ پریونس خان نے راج کیا،یاسرشاہ شکنجہ کس چکے ،فتح یقینی ہے

  

(تجزیہ:راجہ اسدعلی خان)

پاکستان کی بیٹنگ کے شاندار کھیل کے باعث اوول ٹیسٹ پر پاکستان نے کنٹرول حاصل کرلیا ہے۔ تیسرے روز یونس خان نے شاندار ڈبل سنچری بنالی اور اس دوران کرکٹ کے تمام سٹروکس کھیلے ان کی طویل اننگز میں انتیس چوکے اور چار شاندار چھکے شامل تھے۔ انگلستان نے کھیل کے اختتام پر چار وکٹوں پر 88 رنز بنائے تھے اور یوں پاکستان نے اوول میں تاریخی جیت کے حوالے سے شاندار پیش رفت کرلی ہے۔ میچ کے تیسرے روز یونس خان نے وکٹ پر راج کیا۔ یونس نے اپنی ڈبل سنچری کے دوران 29 چوکے اور چار چھکے لگائے۔ ایک موقع پر انہوں نے محمد عامر کے ساتھ 77 رنز کی رفاقت قائم کی۔ محمد عامر کی بیٹنگ دیکھ کر اطمینان ہوا کہ وہ اب باؤلنگ آل راؤنڈر کہلوائے جاسکتے ہیں۔ پاکستان کی سبقت کو ختم کرکے معقول رنز کا ٹارگٹ دینا کافی مشکل ہے۔ پاکستان نے دوسرے روز کے سکور تین سو چالیس رنز چھ کھلاڑی آؤٹ پر اچھی پیش رفت کی۔ سرفراز نے 44 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی۔ انگلستان کا آغاز خراب ہوا اور یوں تین وکٹیں 55 رنز پر گریں تو پاکستان انگلینڈ پر حاوی ہوگیا۔ پاکستان کے نقطہ نگاہ سے میچ انتہائی دلچسپ اور سنسنی خیز مرحلے میں داخل ہوچکا ہے۔ پاکستان کی میچ پر گرفت مضبوط جبکہ دوسری طرف انگلینڈ کی صورتحال انتہائی مایوس کن ہے جس طرح انگلینڈ کی پہلی چار وکٹیں گریں یہ امکانات بھی ہیں کہ کہیں انگلستان کو اننگ کی شکست نہ ہوجائے تاہم انگلینڈ کے بعد میں آنے والے بلے بازوں سے مزاحمت کی توقع کی جاسکتی ہے۔ اوول ٹیسٹ میں ابھی دو دن کا کھیل باقی ہے جبکہ پاکستان کی سبقت اچھی ایک سو چھبیس رنز کی ہے۔ آج پاکستان کے پاس جیت کیلئے ایک سنہری اور یادگار موقع ہے۔ یوم آزادی پر یہ جیت اہلیان وطن کو ایک نادر خوشی سے ہمکنار کرسکتی ہے۔ یاسر شاہ تین وکٹیں حاصل کرچکے ہیں آج اہم کردار ادا کریں گے۔

مزید :

تجزیہ -