وہ ایک کمپنی جس نے درجنوں ایٹم بم بنا ڈالے، ایسی خبر آگئی کہ پڑھ کر یقین نہ آئے

وہ ایک کمپنی جس نے درجنوں ایٹم بم بنا ڈالے، ایسی خبر آگئی کہ پڑھ کر یقین نہ آئے
وہ ایک کمپنی جس نے درجنوں ایٹم بم بنا ڈالے، ایسی خبر آگئی کہ پڑھ کر یقین نہ آئے

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) شمالی کوریا تمام تر عالمی پابندیوں کے باوجود اپنا ایٹمی پروگرام کامیابی سے جاری رکھے ہوئے ہے اور بین البراعظمی ایٹمی میزائل بھی تیار کر چکا ہے۔ دنیا حیران تھی کہ اس کے لیے وہ رقم کہاں سے حاصل کر رہا ہے۔ اب برطانوی نشریاتی ادارے نے اس حوالے سے ایسا انکشاف کر دیا ہے کہ کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا۔ بی بی سی نے اپنی ایک ڈاکومنٹری رپورٹ میں بتایا ہے کہ شمالی کوریا اسلحے کی ایک خفیہ فرم کے ذریعے اربوں روپے کما رہا ہے۔ یہ فرم بظاہر ملائیشیا کی ہے لیکن درحقیقت یہ شمالی کوریا کی ملکیت ہے اور اس کے اثاثوں کی مالیت اربوں ڈالر ہے۔

رپورٹ کے مطابق اس فرم کا نام گلوکوم (Glocom)ہے جو افریقہ، مشرق وسطیٰ اور جنوب مشرقی ایشیاءکے ممالک کو اسلحہ فروخت کررہی ہے۔ملٹری تھنک ٹینک RUSIکی تحقیق کار اینڈریا برگر نے ڈاکومنٹری میں بتایا ہے کہ ”شمالی کوریا اس خفیہ فرم کے ذریعے عالمی پابندیوں کو چکمہ دے کر اتنی رقم کما رہا ہے جو اس کا ایٹمی پروگرام جاری رکھنے کے لیے کافی ہے۔ شمالی کورین حکمران اپنے ملک کی کاروباری سرگرمیاں دنیا کی نظروں سے پوشیدہ رکھنے میں ماہر ہیں۔ہم سمجھتے ہیں کہ شمالی کوریا کو باقی دنیا سے الگ کیا جا چکا ہے اور اب اس کی کوئی تجارتی سرگرمیاں نہیں ہیں لیکن حقیقت اس کے برعکس ہے۔ وہ بہت چالاک ہیں، جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ شمالی کوریا کی نیشنل انشورنس کمپنی برطانیہ میں کام کرتی رہی ہے اور کم جونگ ان کے زیراستعمال گاڑیوں کو امریکہ میں مسلح کیا گیا اور محفوظ بنایا گیا اور امریکی کسٹمز کو چکمہ دے کر یہ گاڑیاں واپس شمالی کوریا بھی پہنچا دی گئیں۔“

مزید : بین الاقوامی


loading...