وہ ملک جس نے امریکا سے لڑائی کے لئے 35 لاکھ جوانوں کی فوج تیار کر لی، تیاریاں مکمل کر لیں

وہ ملک جس نے امریکا سے لڑائی کے لئے 35 لاکھ جوانوں کی فوج تیار کر لی، تیاریاں ...
وہ ملک جس نے امریکا سے لڑائی کے لئے 35 لاکھ جوانوں کی فوج تیار کر لی، تیاریاں مکمل کر لیں

  


پیانگ یانگ(مانیٹرنگ ڈیسک) شمالی کوریا کو عالمی برادری جتنا دبانے کی کوشش کرتی ہے وہ اتنا ہی ابھر کر سامنے آتا ہے اور اس بار اقوام متحدہ کی طرف سے نئی عالمی پابندیاں عائد کیے جانے پر شمالی کوریا کی فوج میں یک لخت35لاکھ فوجیوں کا اضافہ ہو گیا ہے، جس نے امریکیوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ عالمی خبررساں ایجنسی رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق پابندیاں عائد ہونے کے کچھ روز بعد ہی شمالی کوریا کی طرف سے بیان سامنے آیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ”پابندیاں عائد کرنے پر ملک کے 35لاکھ نوجوانوں اور حکمران جماعت کے اراکین نے رضاکارانہ طور پر فوج میں شمولیت اختیار کر لی ہے اور لاکھوں سابق فوجیوں نے بھی دوبارہ فوج جوائن کر لی ہے۔“ بیان کے مطابق ان رضاکار فوجیوں کا کہنا ہے کہ وہ فوج کے شانہ بشانہ مل کر امریکہ کی طرف سے جنگ مسلط کیے جانے کے ممکنہ خطرے سے نمٹیں گے۔

شمالی کوریا کے اخبار روڈونگ سین من کی رپورٹ کے مطابق پابندیاں عائد کیے جانے کے چند روز بعد دارالحکومت پیانگ یانگ میں لاکھوں نوجوان ریلی کی صورت میں اکٹھے ہوئے اور حکومت کو فوج میں شامل ہونے کی پیشکش کی۔ واضح رہے کہ چین بین البراعظمی ایٹمی میزائل تیار کر چکا ہے اور اس کا تجربہ کرنے جا رہا ہے تاہم امریکہ اسے اس تجربے سے باز رکھنے کی ہر ممکن کوشش کر رہا ہے۔شمالی کوریا یہ تجربہ کرتا ہے تو میزائل گوام نامی جزیرے کے پاس ہدف کو نشانہ بنائے گا۔ اس جزیرے پر امریکی فوجی اڈہ موجود ہے۔امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے گزشتہ دنوں دھمکی دی ہے کہ اگر شمالی کوریا یہ تجربہ کرتا ہے تو اسے امریکہ پر حملہ تصور کیا جائے گا اوراس کے جواب میں ایسا کام کیا جائے گا جو دنیا کی تاریخ میں کسی نے نہ دیکھا ہو گا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...