عراقی کرْدستان میں ریفرنڈم ملتوی کرنے سے متعلق امریکی مطالبہ مسترد

عراقی کرْدستان میں ریفرنڈم ملتوی کرنے سے متعلق امریکی مطالبہ مسترد

بغداد(این این آئی)عراق کے کْردوں کی جانب سے خود مختاری سے متعلق ریفرنڈم اپنی مقررہ تاریخ پر 25 ستمبر کو ہوگا۔ یہ بات ایک کْرد ذمے دار نے غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کو بتائی۔امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن نے عراق میں کْردستان کے صدر مسعود بارزانی سے مطالبہ کیا تھا کہ ریجن کی عراق سے علاحدگی کے حوالے سے ریفرنڈم کو ملتوی کر دیا جائے۔مسعود بارزانی کے دفتر سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ ٹیلرسن نے بارزانی سے ٹیلفون پر رابطہ کیا اور کہا کہ واشنگٹن کے نزدیک ریفرنڈم کو ملتوی کرنا زیادہ مناسب ہوگا۔ٹیلرسن نے بات چیت میں کردستان کی جانب سے ایک وفد دارالحکومت بغداد بھیجنے کا خیر مقدم کیا جس کا مقصد بات چیت کے ذریعے معلّق سیاسی مسائل کا حل تلاش کرنا ہے۔ذرائع کے مطابق 25 ستمبر کو مقررہ ریفرنڈم میں کردستان کے تین صوبوں اربیل ، سلیمانیہ اور دہوک کے علاوہ دیگر متنازع علاقوں کی آبادی کی رائے معلوم کی جائے گی کہ آیا وہ عراق سے علاحدہ ہونا چاہتے ہیں یا نہیں۔عراقی آئین کا آرٹیکل 140 مذکورہ علاقوں سے متعلق تنازع کے حل کے واسطے نقشہ راہ فراہم کرتا ہے۔ اس کے تحت سابق صدر صدام حسین کی جانب سے ان علاقوں میں کردوں اور ترکمانوں کے خلاف عربوں کے حق میں کی جانے والی آبادیاتی تبدیلیوں کو ختم کیا جانا چاہیے۔

مزید : عالمی منظر


loading...