ملک و آئین کا دفاع ، انتشاری کا خاتمہ ، فروغ اتحاد ہمارا مشن ہے

ملک و آئین کا دفاع ، انتشاری کا خاتمہ ، فروغ اتحاد ہمارا مشن ہے

لاہور( ایجوکیشن رپورٹر ) ملک کی سیاسی و مذہبی جماعتوں کے قائدین، تاجر اور وکلاء رہنماؤں نے ملی مسلم لیگ کی استحکام پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم وطن عزیز کی طرح 73ء کے آئین کا بھی دفاع کریں گے،اسکی دفعہ 62اور 63ء کے خاتمہ کی کوشش کرنیوالوں کو ملک میں سیاست کرنے کا کوئی حق نہیں،ہم پاکستان کے نظریہ اور دستور کے محافظ ہیں، آئین کو بازیچہ اطفال نہیں بنانے د یں گے۔ انتشار اور پارٹی بازی نہیں اتحاد کی سیاست کریں گے، اب ملک میں کرپشن، توڑ پھوڑ اور دہشت گردی نہیں چلے گی۔ ملک کو صاد ق او ر امین قیادت فراہم ،عورتوں کے حقوق کا تحفظ ، انکی تعلیم کا بہتر انتظام کریں گے۔ این اے 120کسی کی جاگیر نہیں‘ ملی مسلم لیگ ضمنی الیکشن میں بھرپور مقابلہ کرے گی۔این اے120میں محمد یعقوب شیخ صادق و امین امیدوار کی حمایت ملی مسلم لیگ کر رہی ہے ڈور ٹو ڈور انتخا بی مہم چلائیں گے۔ملی مسلم لیگ آج 14اگست کو ملک بھر میں بڑے جلسوں، کانفرنسوں اور ریلیوں کا انعقاد کرے گی۔ ملکی صنعت کا پہیہ تیزی سے چلائیں گے۔ ملی مسلم لیگ مزدوروں کو حقوق دلوائے گی۔یونین کونسل کی سطح پر خدمت کی کمیٹیاں بنائیں گے ۔ میڈ یکل ، ریلیف کے کام کو گلی کوچے تک پہنچائیں گے۔ہم نوجوانوں کو نظریہ پاکستان پڑھائیں گے۔ مظلوم کشمیریوں کی کھل کر مدد و حمایت کی جائے گی۔ حافظ سعید کی نظربندی کشمیریوں کی کمر میں خنجر گھونپنے کے مترادف ہے۔ پاکستان کی خارجہ پالیسی کی اصلاح کی جائے۔کوئٹہ دھما کہ نظریہ پاکستان پر حملہ ہے۔ پاک چین اقتصادی راہداری کو عظیم نعمت سمجھتے ہیں۔ ناصر باغ مال روڈ پر ہونیوالی کانفرنس سے خطاب کرنیوالوں میں صدر ملی مسلم لیگ سیف اللہ خالد، لیاقت بلوچ، پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، محمد علی درانی، مولانا فضل الرحمن خلیل، محمدیعقوب شیخ،مولانا امیر حمزہ، سردار گوپال سنگھ چاولہ، علامہ ابتسام الہٰی ظہیر، حافظ عبدالغفار روپڑی، سید ضیا ء اللہ شاہ بخاری،ذاکرالرحمن صدیقی، محمد شفیق رضا قادری،حافظ عبدالرؤف ،رانا شمشاد احمد سلفی،حق نواز گھمن،حافظ خالد ولید،ابوالہاشم ربانی،غلام قادر سبحانی،تابش قیوم،شیخ نعیم بادشاہ، مولانا بشیر احمد خاکی،مولانا ادریس فاروقی،حافظ عثمان شفیق،علی عمران شاہین ودیگر شامل تھے ۔مقررین کا کہنا تھا اللہ نے پاکستان کو جغرافیائی طاقت دی ہے لیکن کرپٹ اور نااہل عناصر عوام کا استحصال کر رہے ہیں،ملی مسلم لیگ انتشار ،پارٹی بازی نہیں اتحاد کی سیاست کریگی ،دنیا ہمیں جانتی ہے ہمیں نان سٹیٹ ایکٹر کہا گیا ،ہم خدمت کے میدان میں نکلے ،برداشت نہیں کیا گیا،دعوت اورتعلیم کے میدان میں نکلے تو بھی قدغنیں لگائی گئیں۔کشمیر کی بات کرنا ہمارا جرم قرار دیا گیا،ہمارے راستے مسدود کئے گئے پھر ہم نے فیصلہ کیا کہ میدان سیاست میں کھڑے ہوں گے،آج ہم اعلان کرتے ہیں کہ پاکستان کوقائد اعظمؒ ،علامہ اقبالؒ کا پاکستان بنائیں گے۔ پنجاب ہماری بہار ،خیبر پی کے دفاعی حصار ،گلگت بلتستان، سندھ ، بلوچستان ہماری شان ، آزادی کشمیر ہماری منزل ہے ۔ بانی پاکستان نے کشمیر کو شہ رگ کہا تھا ملی مسلم لیگ وقت تک چین سے نہیں بیٹھے گی جب تک کشمیر کو آزادی نہیں مل جاتی۔

استحکام پاکستان کانفرنس

B

مزید : علاقائی


loading...