سی پی او کے دفتر میں اردل روم کا انعقاد پولیس ملازمین کو ملی سزاؤں میں تخفیف

سی پی او کے دفتر میں اردل روم کا انعقاد پولیس ملازمین کو ملی سزاؤں میں تخفیف

ملتان(کرائم رپورٹر) سی پی او ملتان محمد سلیم کی نے گزشتہ روز اپنے دفتر میں اردل روم کا انعقاد کیا۔ جس میں کل 38 ملازمین پیش ہوئے ۔38 ملازمین کی اپیلوں پر سماعت کی گئی۔ اے ایس(بقیہ نمبر19صفحہ10پر )

آئی محمد رفیق کی 26 اپیلیں مقررہ وقت سے تجاوز ہونے کی وجہ مسترد کیں۔جبکہ کنسٹیبلان حامد علی ، عرفان خان، ذیشان انور ، اے ایس آئی شہباز علی ،سابقہ کنسٹیبل صفدر حسین، طارق جاوید، سابقہ سب انسپکٹر خضر حیات، سابقہ ٹریفک وارڈن عابداور ارتضیٰ، سب انسپکٹر عبدالرزاق، سب انسپکٹر جاوید خان، انسپکٹر فیاض احمد ، ہیڈ کانسٹیبل کریم اللہ، اے ایس آئی فیاض حسین ،سب انسپکٹر ملازم حسین، سابقہ ڈرائیور کنسٹیبل کی اپیلیں مسترد کیں۔اے ایس آئی ظفر اقبال کی اپیل پرسزا 1 سال سروس ضبطی کو 6 ماہ سروس ضبطی میں تبدیل کیا۔اے ایس آئی بہاول بخش اور کنسٹیبل زوہیب کی اپیلوں پرسزا 3000 روپے کے جرمانے کو 1500 روپے میں تبدیل کر دیا۔ اے ایس آئی محمد افضل اور غلام مصطفی کی اپیلوں پر سزا 1000 روپے کے جرمانے کو 500 روپے میں تبدیل کر دیا۔ اے ایس آئی ذیشان حیدر اوراے ایس آئی خالد محمود کی اپیلوں پرسزا ایک سروس ضبطی کو ایک انکریمنٹ سٹاپ میں تبدیل کر دیا۔کنسٹیبل مظہر حسین کی اپیل پر سزا دو سال سروس ضبطی کو ایک سال سروس ضبطی میں تبدیل کر دیا۔ ہیڈ کنسٹیبل کریم اللہ کی اپیل پر سزاجرمانہ 2000 روپے کو 1000 روپے میں تبدیل کر دیا۔ علاوہ ازیں جو ملازمان اردل رو م میں دیدہ دانستہ پیش نہ ہوئے ان کی اپیلوں کو مسترد کر دیا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...