قائد اعظمؒ کی شادی ہوئی تو اپنے غسل خانہ کی تعمیر پر پچاس ہزار روپے خرچ کئے، مگر جب گورنر جنرل بنے تو ڈیڑھ روپے کا موزہ لینے سے انکار کر دیا اور کہاکہ۔۔۔

قائد اعظمؒ کی شادی ہوئی تو اپنے غسل خانہ کی تعمیر پر پچاس ہزار روپے خرچ کئے، ...
قائد اعظمؒ کی شادی ہوئی تو اپنے غسل خانہ کی تعمیر پر پچاس ہزار روپے خرچ کئے، مگر جب گورنر جنرل بنے تو ڈیڑھ روپے کا موزہ لینے سے انکار کر دیا اور کہاکہ۔۔۔

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی قیادت میں ہندوستان کے مسلمانوں نے تاریخ کا سینہ چیر کر پاکستان جیسا خوبصورت ملک نکالا لیکن اس ملک کے حکمران قائد اعظم کے سبق بھول گئے جس کی وجہ سے آج ترقی کی بجائے ہم پستیوں کی طرف گامزن ہیں۔

دنیا نیوز نے قائد اعظم کی زندگی کے 2 ایسے واقعات بتائے ہیں کہ جن میں نہ صرف ہمارے حکمرانوں کیلئے بلکہ عام لوگوں کیلئے بھی بہت سے سبق پوشیدہ ہیں۔ ایک واقعہ کے مطابق 1920 ءمیں جب قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی شادی ہوئی تو انہوں نے اپنے غسل خانہ کی تعمیر میں اس وقت کے پچاس ہزار روپے خرچ کئے، مگر یہی جب گورنر جنرل کے عہدے پر فائز ہوئے تو ڈیڑھ روپے کا موزہ لینے سے انکار کر دیا اور کہا کہ غریب مسلمان ملک کے گورنر کو اتنی مہنگی چیز نہیں پہننی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں: آزادی کاپوچھنا ہے تو کشمیریوں ، فلسطینیوں اور سکھوں سے پوچھو، قائد و اقبال کا احسان ہے کہ ہم آزادی سے سانس لے رہے ہیں: سکھ برادری

ایک مرتبہ برطانیہ کے سفیر نے قائد اعظم ؒ سے کہا کہ برطانیہ کے بادشاہ کا بھائی آ رہا ہے آپ انہیں ایئرپورٹ لینے چلے جائیں جس پر قائد اعظمؒ نے یہ شرط رکھی کہ میں تب ایئر پورٹ جاو¿ں گا، اگر میرے بھائی کی برطانیہ آمد پر وہاں کا بادشاہ اسے لینے آئے۔

مزید : لاہور


loading...