یہ سعودی لڑکی جدہ میں کیا کام کرتی ہے؟ جان کر آپ کو یقین نہیں آئے گا کہ سعودی عرب میں۔۔۔

یہ سعودی لڑکی جدہ میں کیا کام کرتی ہے؟ جان کر آپ کو یقین نہیں آئے گا کہ سعودی ...
یہ سعودی لڑکی جدہ میں کیا کام کرتی ہے؟ جان کر آپ کو یقین نہیں آئے گا کہ سعودی عرب میں۔۔۔

  


جدہ (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی خواتین میں عام کھیلوں کا رجحان بھی نہ ہونے کے برابر ہے ، کجا یہ کہ کوئی خاتون پاور اتھلیٹکس اور رکاوٹی دوڑ جیسے مردانہ کھیلوں میں نام بنا لے۔ یہ حیرت انگیز کارنامہ امل باٹیا نامی خاتون نے سر انجام دے ڈالا ہے، جو ایک اتھلیٹ اور فٹنس کوچ کے طور پر صرف سعودی عرب ہی نہیں بلکہ عرب خطے میں اپنی مثال آپ بن گئی ہیں۔

عرب ملک میں اپنی ماں کا آئی پیڈ استعمال کرتے بیٹے نے اُس میں ایسی شرمناک ترین تصویر دیکھ لی کہ پولیس والوں کو اپنے ہی باپ کی شکایت لگا دی کیونکہ۔۔۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق امل باٹیا پیشے کے لحاظ سے انویسٹمنٹ منیجر ہیں اور وہ دو بچوں کی والدہ بھی ہیں۔ دو سال قبل جب انہوں نے دبئی میں فٹنس ٹریننگ کا ایک پروگرام دیکھا تو بہت متاثر ہوئیں اور اسے اپنانے کا فیصلہ کیا۔انہوں نے اپنی کامیابیوں کے سفر کے متعلق بات کرتے ہوئے بتایا کہ ”دوسال قبل جب میں نے اپنے نئے کیریئر کا آغاز کیا تو مجھے بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ مجھے تربیت کیلئے اکثر دبئی اور امریکہ جانا پڑتا تھا۔ میں ایک انویسٹمنٹ منیجر کے طور پر کام کررہی تھی اور دو بچوں کی دیکھ بھال کی ذمہ داری بھی ادا کررہی تھی۔ مجھے اس کیلئے بہت محنت کرنا پڑی لیکن میں خوش ہوں کہ میں نے دونوں کام بہت خوش اسلوبی سے جاری رکھے۔ گزشتہ سال میں نے کویت میں 5کلومیٹر کی رکاوٹوں والی دوڑ میں حصہ لیا اور تیسرے نمبر پر آئی۔ کنگ عبداللہ سٹی میں منعقد ہونے والی 12 کلومیٹر ریس میں بھی میری دوسری پوزیشن تھی۔ اب میں ملازمت چھوڑ چکی ہوںاور اپنی مکمل توجہ سپورٹس پر دے رہی ہوں تا کہ اپنی کامیابیوں میں مزید اضافہ کر سکوں۔“

مزید : عرب دنیا


loading...