عید:دکانداروں کی لوٹ مار ، واٹر ورکس روڈ پر آپریشن، کھالیں ضبط

  عید:دکانداروں کی لوٹ مار ، واٹر ورکس روڈ پر آپریشن، کھالیں ضبط

ملتان،بہاولپور (سٹاف رپورٹر ، سٹی رپورٹر ، نیوز رپورٹر ، بیورو رپورٹ)ضلعی انتظامیہ کی چشم پوشی کے باعث ایل پی جی کی گراں فروشی عروج پر پہنچ گئی ہے ۔ جگہ جگہ غیر قانونی طور پر ری (بقیہ نمبر20صفحہ12پر )

فلنگ کرنے والے دکاندار من مرضی ریٹ پر ایل پی جی فروخت کر رہے ہیں اور انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے ۔ مختلف دکاندار100 ‘ 110‘120اور روپے فی کلو ایل پی جی فروخت کر رہے ہیں ۔ 95فیصد دکانداروں کے پاس ایل پی جی فروخت کرنے کا لائسنس ہی نہیں ہے ۔ زیادہ تر دکاندار 120روپے کلو ایل پی جی فروخت کر رہے ہیں ۔ ان کاکہنا ہے کہ ایل پی جی مختلف کوالٹی میں آرہی ہے ۔ اچھی کوالٹی کی ایل پی جی 120روپے فی کلو فروخت کی جا رہی ہے ۔ ناقص کوالٹی کی ایل پی جی بھی مارکیٹ میں مو جودہے ۔ عےد الاضی کے موقع پر فلاحی اداروں اور دےنی مدارس کی جانب سے قربانی کی کھالوں کے حصول کے لئے بھرپور مہم جارہی رہی شہر بھر مےں رسائی حاصل کرنے کے لئے ٹےمےں تشکےل دی گئےں گھر گھر رابطے بھی جاری رہی جبکہ مدارس کی جانب سے کھالوں کے حصول کے لئے طلباء کی چھٹےاں تک منسوخ کر دی گئےں تھی ۔ عےد الاضحی کی نمازکی ادائےگی کے بعد شہرےوں کی بڑی تعداد نے شہر خاموشاں کا رخ کر لےا جہاں انہوں نے اپنے پےاروں کی قبروں پر حاضری دی پھول چڑھائے اور فاتح خوانی کی،جس کی وجہ سے قبرستانوں مےں شہرےوں بڑا رش دےکھنے مےں آےا اس موقع پر ان کے ہمراہ بچوں کی بڑی تعداد بھی موجود تھی درےں عےد الاضحی کے موقع پر قبرستانوں کے باہرپھول فروشوں نے بھی چھابڑے لگائے جہاں نے شہرےوں نے پھول خرےد اپنے پےاروں کی قبروں پر چڑھائے اور نےاز تقسےم کی ۔ عیدالضحیٰ کے موقع پر ضلعی حکومت کی جانب سے سری پائے جلانے پر پابندی صرف سٹرکوں تک محدود ہو کر رہ گئی ہے، قصائیوں نے گھروں میں بھٹیاں لگا کر سری پائے جلانے کا کام جاری رکھا، اہل محلہ دھویں اورتعفن سے شدید پریشان ہو گئے، بتایا گیا ہے کہ ضلعی حکومت کی جانب سے عیدالضحیٰ کےموقع پر گلیوں ، بازاروں اور سٹرکوں پر سری پائے جلانے پرپابندی عائد کی گئی، جس کو دیکھتے ہوئے قصائیوں نے گھروں میں بھٹیاں لگا کر سری پائے بھوننا شروع کردیئے اور گذشتہ سال کی نسبت زائد اجرت پر سری پائے جلا کردیئے گئے ۔ گذشتہ سال بکرے کے سری پائے جلانے کی اجرت 500روپے تھی جبکہ بڑے کے پائے اور سری بھوننے کے 800روپے تک وصول کئے جاتے رہے، گلیوں اور تنگ مکانات میں بھٹیاں لگنے سے اہل محلہ دھویں اور تعفن کا شدید شکار ہو گئے ۔ عیدالالضحیٰ کے ایام میں واٹر ورکس روڈ پر کھالوں کا کاروبار عروج پر پہنچ گیا تعفن کے باعث شہریوں کو آمدورفت میں مشکلات کا سامنا رہا جبکہ تاجر انتہائی کم داموں پر کھال خریدتے رہے واٹر ورکس روڈ پر کھالوں کا کاروبار کرنیوالوں نے فٹ پاتھ کے ساتھ سٹرک کو بھی ذاتی جاگیر بنا کر عید کے ایام میں اہم شاہراوں پر قبضہ جمائے رکھا کھالوں اور انتڑیوں کی خریدوفروخت سے سٹرک پر بدبو، تعفن پھیلا رہا جس سے شہریوں کو آمدورفت میں مشکلات رہی اسی صورتحال پر میونسپل کارپوریشن نے2بار آپریشن کیا اور کثیر تعداد میں کھالیں قبضہ میں لے لی ہیں ۔ عید الاضحی کے دوسرے روز بھی گرانفروش مافیا شہریوں کی جیبیں صاف کرنے میں مصرف رہا ہے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کے غیر فعال ہونے کا پرچون مافیا نے خوب فائدہ اٹھایا انتظامیہ کی جانب سے مقرر کردہ نرخوں سے 35 سے 50 فیصد جبکہ بعض اشیاء خورونوش کی شہر کے پوش علاقوں میں 100 فیصد تک اضافی چارج کئیے جارہے ۔ عیدقربان‘ بہاول پور تاجران کی خودساختہ مہنگائی نے عوام کاجینا دوبھرکردیا تاجران کریانہ سٹور دکاندار، ریڑھی والے من مانی قیمتوں پراشیاء فروخت کررہے ہیں کوئی چیک اینڈ بیلنس نہ ہے گاہک کی جانب سے رسیدمانگنے اورپرائس کنٹرول لسٹ دکھانے پر دکاندار طیش میں ;200;جاتے ہیں اوربدتمیزی پراتر;200;تے ہیں زراءع کے مطابق بہاول پور میں دکاندارگاہکوں کو بغیررسیداشیاء فروخت کررہے ہیں اندرون بازار اور سرکلرروڈ پر موجود کپڑے کے بڑے بڑے تاجران جعلی اوردونمبرمال دھڑلے سے فروخت کررہے ہیں اورمن مانی قیمتیں وصول کررہے ہیں کپڑے شوز گارمنٹس کاسمیٹکس جیولری بیکری سمیت بنیادی ضروریات زندگی سے تعلق رکھنے والی اشیاء کئی گناقیمت پر فروخت کررہے ہیں انہوں نے کہاکہ ٹرسٹ کالونی،محمدیہ کالونی،ماڈل ٹاءون اے بی سی،سیٹ لاءٹ ٹاءون،سمیت شہربھرکے بازاروں میں جب ان دکانداروں سے پکی رسید یا ضلعی پرائس کنٹرول لسٹ کاتقاضہ کیاجاتاہے تو دکاندار طیش میں ;200;جاتے ہیں اور گاہکوں سے بدتمیزی کرتے ہیں ۔ بہاول پور میں عیدالاضحی کے پہلے اوردوسرے روز شہریوں نے تفریحی مقامات کارخ کیا اور وہ چڑیاگھر دریائے ستلج کے کنارے اورمختلف پارکس پرشہریوں کارش رہا بہاول پورشہر اوراسکے مضافات سے تعلق رکھنے والے علاقوں سے ;200;ئے ہوئے افراد اپنے بچوں کے ہمراہ چڑیا گھرکی سیر کے علاوہ اور مختلف پکوانوں سے لطف اندوزہوتے رہے ۔ عیدقربان کے دونوں روز شہری بڑی تعداد میں قربانی کے گوشت کاقیمہ نکلواتے رہے اور قیمہ نکالنے والی مشینوں پر شہریوں کارش رہا شہریوں محمدطارق، امان اللہ فاروق، لیاقت بھٹی، شمشیرخان، کامران عزیزگوپانگ، نسیم اختر،سجادسندھا نے بتایا کہ عیدقربان کے موقع پر گوشت کاقیمہ بنوانا ہرگھرکی ضرورت بن گئی ہے قیمہ کی مختلف ڈشزبڑے شو ق سے کھائی جاتی ہیں جس میں کوفتے ، چپل کباب، ;200;لو قیمہ، شملہ مرچ قیمہ، وغیرہ شامل ہیں ۔ لوٹ مار

مزید : ملتان صفحہ آخر