اناڑی قصائیوں کی یلغار،اونٹ 30،بیل اور بکرا ذبح کرنے کا 6ہزار وصول کیا

اناڑی قصائیوں کی یلغار،اونٹ 30،بیل اور بکرا ذبح کرنے کا 6ہزار وصول کیا

  

لاہور (سٹی رپورٹر) صوبائی دارالحکومت میں عید الاضحی پر قصابوں نے جانور ذبح کرنے کے منہ مانگے دام وصول کیے۔ پیشہ ور قصابوں کے ساتھ ساتھ ہزاروں مو سمی قصائی بھی عید کے دونوں روز جانور ذبح کر تے رہے۔ اس بار زیادہ قربانی برے جانور بیل، گائے، اور ویہڑے کی دیکھنے میں آئی جبکہ لاکھوں کی تعداد میں بکروں کے ذریعے بھی سنت ابراہیمی ادا کی گی گئی۔ عید کے پہلے روز قصائیوں نے برے جانور بیل، گائے کو ذبح کرنے 15سے20ہزار روپے اور بکرے کے 3 سے 6 ہزار روپے تک وصول کیے تاہم اونٹ کی قربانی کم جگہوں پر کی گئی جہاں قصابوں نے اونٹ ذبح کرنے کے 30ہزار تک وصول کیے۔ اکثر شہریوں نے عید پر جانور قربان کروانے کیلئے ایڈوانس بکنگ کروارکھی تھی اور قصابوں نے ایک جانور ذبح کرنے کے بعد دوسرا اور دوسرے کے بعد تیسرے گھر کا رخ کرلیا جبکہ کھال اتارنے کے کئی کئی گھنٹوں بعد گوشت بنایا گیا۔ بعض مقامات پرگوشت بنانے میں تاخیر کرنے پر قصائیوں اور شہریوں کے جھگڑتے بھی ہوتے رہے۔ عید کے دونوں روز کھالوں کی خرید و فروخت کا کاروبار بھی خوب ہوتا رہا۔ اگرچہ صوبائی حکومت نے کالعدم تنظیموں کی جانب سے کھالیں اکٹھی کرنے پر پابندی عائد کر رکھی تھی تاہم دیگر سماجی، رفاعی، مذہبی جماعتیں اور تنظیمیں کھالیں اکٹھی کرنے میں مصروف رہیں۔ شوکت خانم میموریل ہسپتال، جماعت اسلامی سمیت دیگر داروں کی جانب سے بھی بڑی تعداد میں کھالیں اکھٹی کی گئیں۔ شہر کی تاریخی چمرا منڈی میں نمازِ عید کے بعد دوسرے روز رات گئے تک کھالوں کی خرید اور فروخت اور نیلامی کا سلسلہ جاری رہا۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -