فاؤنڈر گروپ انتخابات میں کلین سویپ کرے گا: افتخار علی ملک 

  فاؤنڈر گروپ انتخابات میں کلین سویپ کرے گا: افتخار علی ملک 

اسلام آباد (اے پی پی) دی فاؤنڈر گروپ ملک بھر کے چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے آئندہ انتخابات برائے سال 2020ء میں کلین سویپ کرے گا۔ تاجروں اور بزنس کمیونٹی کی نمائندہ تنظیم دی فاؤنڈر کے کنوینر افتخار علی ملک نے کہا ہے کہ ملک بھر کی بزنس اور انڈسٹریل کمیونٹی کی بھاری اکثریت نے فاؤنڈر گروپ کی بھر پور حمایت کا اعلان کیا ہے اور فاؤنڈر گروپ ملک بھر کے چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے آئندہ انتخابات برائے سال 2020ء میں کلین سویپ کرے گا۔ دی فاؤنڈر کے کنوینر افتخار علی ملک نے کہا کہ تاریخ شاہد ہے کہ ہمارے مخالفین کو تاجر برادری کے مسائل حل کرانے میں کبھی کامیابی نصیب نہیں ہوئی اور ووٹرز کو متوجہ کرنے کیلئے ان کے کریڈٹ پر کچھ بھی نہیں ہے جبکہ ملک بھر کی تاجر برادری ہماری بے لوث خدمات سے آگاہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی 80 فیصد سے زائد بزنس کمیونٹی یونائیٹڈ بزنس گروپ کو سپورٹ کرتی ہے کیونکہ اس کی قیادت نے ہمیشہ تاجروں اور صنعتکاروں کو درپیش مسائل کو بروقت حل کرانے کیلئے انتھک محنت کی ہے اور اس نے حکومت کے سامنے بزنس کمیونٹی کی عزت و وقار کو بلند کیا ہے اور وہ خدمت کا یہ سلسلہ آئندہ بھی جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ ملکی ترقی میں نجی شعبے کے کردار کو مزید بڑھانے کیلئے ملک بھر کے چیمبرز کو مزید مضبوط اور مستحکم کیا جائے گا۔ انہوں نے چیمبرز کے تمام سبکدوش ہونے والے صدورکی انتھک محنت اور پروفیشنل خدمات کو سراہتے ہوئے کہا کہ سب نے تمام چیمبرز اور تنظیموں کو اعتماد میں لیتے ہوئے تاجر برادری کے مسائل حل کرانے میں اپنی بہترین توانائیاں صرف کی ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان کی بہترین اور متحرک قیادت پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے افتخار علی ملک نے کہا کہ بزنس فرینڈلی پالیسیوں کے نفاذ میں تاجر برادری حکومت کی بھر پور حمایت کرتی ہے۔ وزیر اعظم عمران خان، مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد اور چیئرمین ایف بی آر شبر رضا زیدی نے یقین دلایا ہے کہ بزنس کمیونٹی کے تمام جائز مطالبات منظور اور ان کو درپیش حقیقی مسائل حل کئے جائیں گے تاکہ ملک میں کاروباری سرگرمیاں فروغ پا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ چیلنجز ہمیشہ مواقع لیکر آتے ہیں، صرف بزنس مین کی سوچ مثبت ہونی چاہیے اور حکومت کو مسئلہ کے حل کیلئے دوستانہ انداز اختیار کرنا چاہیے کیونکہ تاجر ملکی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہیں اور وہ ملکی معیشت کی بحالی میں ہر ممکن کردار ادا کرنے کیلئے تیار ہیں۔ 

مزید : کامرس