نواز شریف کے کزنوں کی زیر ملکیت کشمیر شوگر ملز کیس کی سماعت

نواز شریف کے کزنوں کی زیر ملکیت کشمیر شوگر ملز کیس کی سماعت

  

لاہور(نامہ نگار)بینکنگ عدالت میں بینک الفلاح کے ڈیفالٹرمیاں نواز شریف کے کزنوں کی زیر ملکیت کشمیر شوگر ملز کیس کی سماعت ہوئی،فاضل جج نے میاں نواز شریف کے کزنوں کو یکم اکتوبر کو دوبارہ طلبی کے نوٹس جاری کر تے ہوئے سماعت ملتوی کردی، عدالت نے ملزم میاں شاہد شفیع، طارق شفیع، جاوید شفیع، علی پرویز، ابراہیم طارق کو ٹرائل کے لئے بھی طلب کر لیا،بینکنگ عدالت نمبر 5 کے جج ضیاء القمر نے بینک الفلاح کی درخواست پر سماعت کی،بینک الفلاح کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ کشمیر شوگر ملز مالکان نے 2013ء میں قرض حاصل کیا، شوگر ملز مالکان طارق شفیع، جاوید شفیع، ابراہیم طارق، زاہد شفیع، علی پرویز نے ذاتی گارنٹی بھی دی کشمیر شوگر ملز کی طرف سے حسنین طارق شفیع، میاں پرویز شفیع اور خالدہ پرویز نے بھی قرض کے لئے گارنٹی دی، قرض کے لئے شوگر ملز مالکان نے چینی کی 50 کلو والی 2 لاکھ 17 ہزار 400 بوریاں رہن رکھوائیں، ملزموں نے بینک الفلاح کی واجب الادا رقم کی ادائیگی سے بچنے کے لئے رہن شدہ سٹاک چوری کروا دیا، قرض کی عدم ادائیگی پر کشمیر شوگر ملز کو 26 مارچ کو ڈیفالٹر قرار دیا گیا، بینک کا رہن شدہ سٹاک کشمیر شوگر ملز سے غائب کرنے پر میاں شاہد شفیع سمیت  دیگر کزنوں کیخلاف فوجداری کارروائی عمل میں لائی جائے۔

مزید :

صفحہ اول -