کورونا فنڈز میں مبینہ بے قاعدگیاں، وفاقی سیکرٹری صحت کی سینیٹ کمیٹی کومیڈیا کی موجودگی میں بریفنگ سے انکار

 کورونا فنڈز میں مبینہ بے قاعدگیاں، وفاقی سیکرٹری صحت کی سینیٹ کمیٹی ...

  

اسلام آباد(آئی این پی)سینیٹ قائمہ کمیٹی برائے صحت میں کورونا فنڈز میں مبینہ بے قاعدگیوں کے معاملے پر وفاقی سیکرٹری صحت نے میڈیا کی موجودگی میں بریفنگ دینے سے معذرت کرلی، سیکرٹری صحت نے کمیٹی کو کورونا فنڈز کے معاملے پر ان کیمرہ بریفنگ دینے کی پیشکش کردی  اور کہا کہ کچھ ایسے معاہدے ہیں جن کو سب کے سامنے پبلک نہیں کر سکتے،  اگر بریفنگ دی تو پاکستان کو ملنے والی ویکسین بند ہوجائیں گی۔ کمیٹی نے اتفاق کیا کہ اس ضمن میں ان کیمرہ بریفنگ دی جائے۔  چیف ایگزیکٹو ہیلتھ ریگولیٹری اتھارٹی نے اسلام آباد میں منشیات کی بحالی کا مراکزکے حوالے  رپورٹ کمیٹی میں پیش کی اور انکشاف کیا کہ  منشیات کی بحالی مراکز  ملکی و غیر ملکیمعیار کے مطابق نہیں  ہیں، مراکز میں ایسے مریض  بھی ہیں جنہوں نے 6ماہ تک سورج نہیں دیکھا، مراکز میں غیر انسانی سلوک کیا جا رہا ہے،نہ ہی کمروں میں ہوا کا کوئی انتظام ہوتا ہے،نشے کے عادی مریضوں کو مراکز میں کیا ادویات دی جا رہی ہیں،کوئی ریکارڈ نہیں،کچھ مراکزایسے ہیں جہاں جیل کی طرح سلاخیں ہیں، جن کی پیچھے مریضوں کو رکھا جاتا ہے۔جمعہ کو چیئرمین محمد ہمایوں کی زیر صدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے صحت کا اجلاس ہوا۔ سیکرٹری صحت کی پیشکش پر پیپلز پارٹی کے رکن کمیٹی سینیٹر بہرہ مند تنگی نے اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا کہ کورونا کا معاملہ عوامی اہمیت کا ایک مسئلہ ہے،اس معاملے کو ان کیمرا کیوں کیا جائے؟۔سیکرٹری صحت نے جواب دیا کہ کچھ ایسے معاہدے ہیں جن کو سب کے سامنے پبلک نہیں کر سکتے، بہرامند تنگی نے کہا کہ کیا میڈیا کے سامنے بریفنگ سے ویکسین پر پابندی لگ جائیگی۔ سیکرٹری نے کہا کہ اگر بریفنگ دی تو پاکستان کو ملنے والی ویکسین بند ہوجائیں گی۔ کمیٹی نے اتفاق کیا کہ اس ضمن میں ان کیمرہ بریفنگ دی جائے۔

سیکریٹری کا انکار

مزید :

صفحہ آخر -