’عمران خان کی افغانستان میں مخلوط حکومت کی تجویز مان لی جاتی تو آج افغانستان میں صورتحال مختلف ہوتی‘

’عمران خان کی افغانستان میں مخلوط حکومت کی تجویز مان لی جاتی تو آج افغانستان ...
’عمران خان کی افغانستان میں مخلوط حکومت کی تجویز مان لی جاتی تو آج افغانستان میں صورتحال مختلف ہوتی‘

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین نے کہا ہے کہ پاکستان افغانستان میں امن چاہتا ہے، افغانستان میں بدلتی ہوئی صورتحال پر گہری نظر ہے، وزیراعظم عمران خان کی افغانستان میں مخلوط حکومت کی تجویز مان لی جاتی تو آج افغانستان میں صورتحال مختلف ہوتی، نریندر مودی کی حکومت میں بھارتی عوام یوم سیاہ ہی منا سکتے ہیں، کووڈ کے دوران بھارت میں ہونے والے جانی و مالی نقصان کی ذمہ داری نریندر مودی پر عائد ہوتی ہے، قیام پاکستان سے لے کر اب تک کا سفر طویل قربانیوں اور جدوجہد پر مبنی ہے۔

آزادی کپ 2021ء کی تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے  وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ کراچی سے خیبر تک ملک بھر میں یوم آزادی بھرپور طریقے سے منایا جا رہا ہے، آج کا میچ آزادی کی خوشیوں میں اضافے کا باعث بنا، یہ میچز ہماری آزادی کا ثمر ہیں،پوری قوم کو یوم آزادی کی مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ قیام پاکستان سے لے کر اب تک کا سفر طویل قربانیوں اور جدوجہد پر مبنی ہے، ہم نے کسمپرسی کے حالات میں اپنے سفر کا آغاز کیا لیکن آج ہمارے پاس اچھے گراؤنڈز، اچھے کھلاڑی اور بہترین یونیورسٹیاں موجود ہیں،ہمارے پاس صرف ایک ہیوی انڈسٹری کا ایک کارخانہ تھا، آج پاکستان جیٹ طیارے تیار کرنے والے 9 ممالک میں شامل ہے، آج ہم گاڑیاں خود تیار کر رہے ہیں، ہم دنیا کی پانچویں بڑی قوم ہیں، ہمارا شمار دنیا کی سات ایٹمی طاقتوں میں ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ کامیابیاں ہمیں آزادی کی نعمت کے باعث ملیں، کچھ لوگوں کو مایوسی پھیلانے کی عادت ہوتی ہے،جو لوگ سمجھتے ہیں کہ ہمیں فیصلوں میں آزادی حاصل نہیں تو وہ ہندوستان اور پاکستان کے مسلمانوں کے حالات کا مشاہدہ کرلیں، فرق خود ہی سامنے آ جائے گا، ہمیں اپنی آزادی کی قدر کرتے ہوئے اللہ کا شکر ادا کرنا چاہئے، ہمیں اپنے وطن پر شہید ہونے والوں کی قربانیوں کو یاد رکھنا چاہئے جن کی قربانیوں کی بدولت آج ہم کرکٹ میچ کھیل رہے ہیں اور امن سے زندگی گزار رہے ہیں۔

چوہدری فواد حسین نے کہا کہ اپنی خوشیوں میں ان شہیدوں اور ان لوگوں کو یاد رکھنا چاہئے جنہوں نے اپنی زندگی میں مصائب اور دکھ جھیلے، آج ان کی قربانیوں کی بدولت ہم آزادی جیسی نعمت سے لطف اندوز ہو رہے ہیں۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ قوم یقین رکھے کہ عمران خان کی زیر قیادت ملک ترقی کی جانب گامزن ہے، پاکستان کا مستقبل مستحکم، آزاد اور ترقی یافتہ قوم کا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم افغانستان میں امن چاہتے ہیں، ہماری کوشش ہے کہ کابل میں تمام فریقین ایک آئین اور نظام پر متفق ہو جائیں تاکہ افغانستان میں امن آ سکے۔ ایک اور سوالپر وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ اس وقت جب دنیا کورونا کو شکست دینے کے قریب تھی، نریندر مودی کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ڈیلٹا وائرس پوری دنیا میں پھیلا، ہمیں بھارت کے عوام سے ہمدردی ہے۔

مزید :

قومی -