لاہور کے 9 روز عارضی فوڈ بازار بن گئے ، مضر صحت مچھلی اور یخنی کی فروخت عام

لاہور کے 9 روز عارضی فوڈ بازار بن گئے ، مضر صحت مچھلی اور یخنی کی فروخت عام

 لاہور(جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت کے 9زونوں کی انتظامیہ ’’سردی‘‘ کمانے نکل پڑی ہے، شہر کے 9زونوں کی حدود میں سڑکوں چوکوں اور بازاروں میں فوڈ بازار قائم کر ا دیئے ہیں جن سے شہر میں تجاوزات میں اضافہ ہو گیا تو دوسری طرف ان علاقوں میں لگائے گئے سڑک کنارے فوڈ بازاروں میں ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا ہے دوپہر کے بعد شہر ان عارضی فوڈ پوائنٹس سے سج جاتا ہے جہاں جعلی اور غیر معیاری گھی اور مصالحہ جات میں مچھلی ،چکن تل کر شہریوں کی زندگیوں سے کھیلنے کاسلسلہ شروع ہو جاتا ہے دوسری طرف نیم مردہ مرغی سے یخنی اور سوپ بنا کر سستے داموں فروخت کیا جاتا ہے توانائی دینے کی بجائے الٹا ہیضہ کا باعث بن رہا ہے سوپ یخنی اور سبز چائے اور غیر معیاری اور ممنوعہ کیمیکلز کا استعمال کیا جا رہا ہے سبز چائے کی تیاری میں دودھ نہیں دودھ نما کیمیکل استعمال ہوتا ہے جس پر فوڈ اتھارٹی نے آنکھیں بند کر رکھی ہیں بتایا گیا ہے کہ موسم سرد ہوتے ہی صوبائی دارالحکومت فش کارنر ،سوپ، قہوے، سبز چائے اور خشک میوہ جات کی منڈی میں تبدیل ہو گیا ہے جن کی اکثریت غیر معیاری ہے دوسری طرف شہر کی اہم شاہراہوں اور مارکیٹوں سروس روڈز پر پکوڑوں کی ریڑیاں لگ گئی ہیں ۔ سروے کے مطابق سب سے زیادہ برے حالات عزیز بھٹی زون میں ہیں جہاں مغلپورہ سے ہربنس پورہ تک لاہور کینال کے دونوں اطراف سروس روڈز پر بازاروں کے اندر بازار قائم کرا دیئے ہیں ۔لال پل سے ہربنس پورہ تک سروس روڈ مکمل بند ہے۔ اسی طرح علامہ اقبال روڈ، تاج پورہ چوک، جو ڑے پل صدر گول چکر کے اردگرد عارضی ہوٹل قائم کرائے گئے ہیں گلبرگ ٹاؤن نے ریلوے اسٹیشن چوک ،مغلپورہ چوک ، گڑھی شاہو، سمیت پورے زون میں جگہ جگہ سوپ کارنر فش کارنر سڑکوں پر قائم کرا دیئے ہیں۔ شالا مار زون، واہگہ زون میں بھی اہم سڑکیں اور بازار غیر معیاری جعلی فش کارنر سوپ کی ریڑھیوں سے بھرے پڑے ہیں داتا گنج بخش ، سمن آباد، اقبال ٹاؤن، راوی ٹاؤن، نشتر زون میں بھی یہ دھندہ عروج پر ہے۔ اس حوالے سے میئر لاہور کرنل مبشر(ر) جاوید سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ اس کا نوٹس لے لیا گیا ہے فوڈ اتھارٹی کو مراسلہ بھجوایا جا رہا ہے کہ وہ نوٹس لے ۔ دوسری طرف زونوں کی انتظامیہ کو بھی کارروائی کا حکم جاری کر دیا ہے۔

بازار

مزید : میٹروپولیٹن 1