سعودی معیشت میں سینما کے شعبے کا حصہ 24 ارب ڈالر سالانہ ہوگا

سعودی معیشت میں سینما کے شعبے کا حصہ 24 ارب ڈالر سالانہ ہوگا

ریاض(آئی این پی)سعودی عرب کی وزارتِ ثقافت اور اطلاعات کے تخمینے میں کہا گیا ہے کہ مملکت میں سینماؤں کے کھلنے سے مجموعی قومی پیداوار ( جی ڈی پی )میں 24 ارب ڈالرز کا سالانہ اضافہ ہوگا۔غیر ملکی میڈیاکے مطابق سعودی وزارت کا کہنا ہے کہ سینما کی صنعت سے روزگار کے ہزاروں نئے مواقع پیدا ہوں گے اور اس کے مجموعی طور پر قومی معیشت پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔اس سے اقتصادی شرح نمو میں اضافہ ہوگا اور میڈیا منڈی کو فروغ ملے گا۔سینما کی صنعت سے 2030 تک کل وقتی تیس ہزار سے زیادہ ملازمتوں کے مواقع پیدا ہوں گے۔اس کے علاوہ ایک لاکھ تیس ہزار سے زیادہ جز وقتی روزگار کے مواقع میسر آئیں گے۔سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی برائے سمعی وبصری میڈیا کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے حال ہی میں ملک میں سینما تھیٹرز کھولنے کے خواہاں افراد کو لائسنس کے اجرا کی منظوری دے دی ہے۔ اس بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چئیرمین سعودی عرب کے وزیر ثقافت اور اطلاعات ڈاکٹر عواد بن صالح العواد ہیں۔یادرہے کہ 1930 کے عشرے میں سعودی عرب میں کام کرنے والے مغربی ملازمین کے لیے نجی عمارتوں میں سینما تھیٹر کھولے گئے تھے۔یہ سینماگھر سعودی عرب کی بڑی تیل کمپنی آرامکو نے قائم کیے تھے۔

تب آرامکو کی پیش رو کمپنی کا نام کیلی فورنیا عرب اسٹینڈرڈ آئیل کمپنی تھا۔

مزید : عالمی منظر