اسلام آباد ہائیکورٹ نے عامر لیاقت کو کسی بھی ٹی وی چینل پر تاحکم ثانی پروگرام اورتجزئیے سے روک دیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عامر لیاقت کو کسی بھی ٹی وی چینل پر تاحکم ثانی ...

اسلام آباد (این این آئی)اسلام آباد ہائی کورٹ نے تاحکم ثانی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کو کسی بھی چینل پر پروگرام کرنے اور تجزیہ دینے سے روک دیا۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ڈاکٹر عامر لیاقت حسین پر تاحیات پابندی کیلئے دائر درخواست پر سماعت کی جبکہ درخواست گزار محمد عباس کی جانب سے بیرسٹر شعیب رزاق عدالت میں پیش ہوئے۔درخواست گزار کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کے پاس اسلامی تعلیمات کی کوئی مستند ڈگری موجود نہیں اور وہ کئی برس سے معاشرے میں مذہبی اور معاشرتی منافرت پھیلا رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ عامر لیاقت حسین اپنے پروگرام میں کفر اور غداری کے فتوے لگاتے ہیں اور ان کے فتوؤں سے کئی لوگوں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہو جاتے ہیں۔درخواست گزار کے وکیل کے مطابق پیمرا اپنی ذمہ داری پوری کرنے میں ناکام رہا ہے جبکہ عامر لیاقت حسین کیلئے پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا پر تاحیات پابندی لگائی جائے۔اسلام آباد ہائی کورٹ نے درخواست گزار کے وکیل کا موقف سننے کے بعد تاحکم ثانی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کو کسی بھی چینل پر پروگرام کرنے اور تجزیہ دینے سے روکنے کا حکم دے دیا۔عدالتِ عالیہ نے درخواست پر وفاقی حکومت، پیمرا، پی ٹی اے اور عامر لیاقت حسین سے جواب طلب کرلیا اور سماعت 10 جنوری 2018 تک کیلئے ملتوی کر دی۔

عامر لیاقت/پابندی

مزید : علاقائی