بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کیخلاف مسلم دنیا متحد ہو جائے: حافظ سعید

بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کیخلاف مسلم دنیا متحد ہو جائے: ...

لاہور(لیڈی رپورٹر )امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دیکردہشت گرداسرائیل کو مظلوم فلسطینی مسلمانوں پر مظالم کیلئے مزید شہ دی گئی۔ مسلمان ملک امریکہ سے سفارتی تعلقات ختم کریں‘ القدس پر اسرائیلی قبضہ ناقابل برداشت ہے۔ مسلم حکمرانوں کو جرأتمندانہ اقدامات کرنا ہوں گے۔ آج اسلام آباد میں دفاع پاکستان کونسل کی اہم کل جماعتی کانفرنس ہو گی۔ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کے حوالہ سے مضبوط لائحہ عمل ترتیب دینے کی ضرورت ہے۔ پوری مسلم امہ مظلوم فلسطینی مسلمانوں کے ساتھ ہے۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ جب سے امریکہ نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دیا ہے غاصب اسرائیلی فوج کی جانب سے نہتے فلسطینی مسلمانوں کے قتل عام میں اور زیادہ شدت پیدا ہو گئی ہے۔ روزانہ فائرنگ اور دہشت گردی کا ارتکاب کرتے ہوئے فلسطینی مسلمانوں کی نسل کشی کی جارہی ہے۔ او آئی سی سمیت تمام بین الاقوامی فورمز پر اسرائیلی ظلم و بربریت کیخلاف بھرپور آواز بلند کی جانی چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کیخلاف پوری مسلم دنیا متحد ہو جائے۔ تحفظ قبلہ اول کیلئے مسلم ممالک باہمی اختلافات ترک کردیں۔ صیہونی و یہودی سازشیں ناکام بنانے کیلئے مسلمان ملکوں کو ایک ہوکر بھرپور کردار ادا کرنا چاہئے۔مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا اعلان بہت بڑی جنگ کا پیش خیمہ ہے۔ مظلوم فلسطینی مسلمان مدد کیلئے پکار رہے ہیں۔ وہ آج پھر کسی صلاح الدین ایوبی کے منتظر ہیں۔ انہوں نے کہاکہ یہودیوں کی جانب سے آج یہ باتیں بھی کی جا رہی ہیں کہ مدینہ منورہ بھی ان کا ہے۔ تل ابیب میں جو نقشہ لگایا گیا ہے. اس میں مدینہ کو یہودیوں کی ریاست دکھایا گیا ہے۔ امریکی صدر ٹرمپ نے وہ فیصلہ کیا ہے جو پہلے کسی امریکی صدر نے نہیں کیا۔ مسلمان ملک اگر خاموش رہے تو یہ سلسلہ یہیں تک رکنے والا نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ 17دسمبر کو مال روڈ پر دفاع پاکستان کونسل کے زیر اہتمام بڑی تحفظ بیت المقدس کانفرنس ہو گی جس میں شہر اور گردونواح سے ہزاروں افراد شریک ہوں گے۔

مزید : صفحہ آخر