فاٹا کے نام پر سیاسی دکان چمکانا بند کیا جائے،نور رحمان

فاٹا کے نام پر سیاسی دکان چمکانا بند کیا جائے،نور رحمان

مہمند ایجنسی ( نمائندہ پاکستان) مہمند ایجنسی، فاٹا کا خیبر پختونخواہ میں شامل کرنے اور ایف سی آر کے یکسر خاتمے کو مسترد کرتے ہیں۔ حقیقی معنوں میں 80 فیصد لوگ اصلاحات اور ترمیم چاہتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار مہمند ایجنسی کسان صدر نوررحمن اور جنرل سیکرٹری بختور سید باچا نے ایک اخباری بیان میں کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن اور محمود خان اچکزئی حقیقی معنوں میں قبائل کے حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ قبائلی عوام سے اگر شفاف طریقے سے رائے لی گئی تو 80 فیصد لوگ صوبے میں انضمام اور ایف سی آر کے ساتھ رسم و رواج کو ختم کرنے کے خلاف ہیں۔ یہاں کے مقامی باشندوں سے پوچھے بغیر غیر قبائلی اور سیاسی پارٹیوں نے یک طرفہ طور پر صوبہ خیبر پختون خواہ میں انضمام کا واویلا شروع کر دیا ہے۔ جس کے پیچھے قبائلی عوام کے نہیں بلکہ سیاسی مفاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا کے نام پر سیاسی دکان چمکانا بند کیا جائے۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ ایف سی آر میں ترمیم کر کے فاٹا کو بر قرار رکھ کر آرٹیکل 247 کا خاتمہ کیا جائے۔

B

مزید : پشاورصفحہ آخر