شادی کروانے والی ویب سائٹ پر نوجوان لڑکی کو پولیس والا پسند آگیا، شادی بھی ہوگئی لیکن یہ آدمی دراصل کون تھا؟ حقیقت سامنے آئی تو لڑکی کو زندگی کا سب سے زوردار جھٹکا لگ گیا، یہ تو سوچا بھی نہ تھا کہ۔۔۔

شادی کروانے والی ویب سائٹ پر نوجوان لڑکی کو پولیس والا پسند آگیا، شادی بھی ...
شادی کروانے والی ویب سائٹ پر نوجوان لڑکی کو پولیس والا پسند آگیا، شادی بھی ہوگئی لیکن یہ آدمی دراصل کون تھا؟ حقیقت سامنے آئی تو لڑکی کو زندگی کا سب سے زوردار جھٹکا لگ گیا، یہ تو سوچا بھی نہ تھا کہ۔۔۔

  

نئی دلی(نیوز ڈیسک)انٹرنیٹ پر شادیاں کروانے والی ویب سائٹیں جرائم کا گڑھ بن گئی ہیں۔ رشتے کی تلاش میں ان ویب سائٹوں کا رُخ کرنے والی لڑکیوں کی عزت پامال ہونے کے متعدد واقعات پیش آچکے ہیں۔ ایک اور ایسا ہی افسوسناک واقعہ بھارتی ریاست بھوپال میں پیش آیا ہے جہاں ایک بدقماش نوجوان نے خود کو ڈی ایس پی ظاہر کرکے ایک لڑکی کی زندگی برباد کر ڈالی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ 27سالہ ملزم سمیر انور خان سے پولیس کی وردی بھی برآمد ہو گئی ہے جس پر اس نے ڈی آئی جی رینک کے بیج لگارکھے تھے۔ اس نے لڑکی کے اہلخانہ کو بھی دھوکہ دے کر خوب مرعوب کرلیا اور شادی کی آڑ میں 24 سالہ لڑکی کی عزت سے کھیلتا رہا۔

’میں 9 ماہ کی حاملہ تھی، فوجی ہمارے گھر میں داخل ہوئے اور میرا ریپ کردیا، اس کے بعد میرا شوہر میرے پر بری طرح برس پڑا کیونکہ اس کے مطابق۔۔۔‘ روہنگیا خاتون کی وہ داستان جو غیر مسلموں کو بھی خون کے آنسو رُلادے

انویسٹی گیشن آفیسر ایس آر پی سنگھ کا کہنا تھا کہ ملزم کا تعلق وارانسی شہر سے ہے لیکن وہ عارضی طور پر تھین میں مقیم تھا۔ بدقسمت لڑکی کے رشتے کی تلاش کے لئے اس کے والد نے ہی تین ماہ قبل ایک ویب سائٹ پر اس کا پروفائل بنایا تھا۔ اسی ویب سائٹ پر سمیر نے خود کو ڈی ایس پی اور سی بی آئی کا خفیہ ایجنٹ ظاہر کررکھا تھا۔ سمیر کی جانب سے ایک شخص نے اس کا چچا بن کر لڑکی کے والد سے رابطہ کیا اور یوں دونوں خاندانوں کے درمیان بات چیت کا آغاز ہوا۔ سمیر نے لڑکی والوں کو اپنی جعلی فیملی سے ملوا کر شادی بھی کرلی اور بھوپال کے ایک ہوٹل میں لے جا کر اس کی عزت سے کھلواڑ کرتا رہا۔

متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے کہ ملزم کے انداز و اطوار سے اسے شک ہونے لگا تھا کہ وہ پولیس افسر نہیں ہے، بلکہ شاید کچھ بھی نہیں کرتا تھا۔ جب کچھ تحقیق و تفتش کی گئی تو یہ خدشات سچ ثابت ہوئے۔ تب تک شاطر ملزم لڑکی کے والد کو ایک اور دھوکہ دے کر اس سے دو لاکھ روپے بھی ہتھیا چکا تھا۔ متاثرہ لڑکی کے والد کی شکایت پر ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور اسے کے خلاف قانونی کاروائی جاری ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس