آصف زرداری خصوصی طیارے سے کراچی پہنچ گئے، ٹیسٹ کے بعد معالج کا تعین کیا جائے گا

      آصف زرداری خصوصی طیارے سے کراچی پہنچ گئے، ٹیسٹ کے بعد معالج کا تعین کیا ...

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق صدر آصف علی زرداری کو ضمانت کے بعد خصوصی طیارے کے ذریعے کراچی منتقل کر دیا گیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کلفٹن کے نجی ہسپتال میں سابق صدر کیلئے کمرہ تیار کر لیا گیا ہے۔ سابق صدر ضیا الدین ہسپتال کے وی آئی پی سویٹ ٹو میں رہیں گے۔آصف زرداری کے علاج کیلئے خصوصی سٹاف کو بھی مقرر کر دیا گیا ہے۔ سابق صدر کے ٹیسٹ کے بعد معالج کا تعین کیا جائے گا۔ہسپتال پہنچنے کے بعد سابق صدر کے مختلف ٹیسٹ ہوں گے۔ آصف زرداری کو کمر اور ریڑھ کی ہڈی میں درد کی شکایات ہیں جبکہ ان کے دل میں تین سٹنٹ ہیں جس کی وجہ سے انجیو پلاسٹی کا بھی امکان ہے۔اولڈ ایئرپورٹ پر چیئرمین پی پی بلاول بھٹو، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ، سعید غنی، ارکان قومی وصوبائی اسمبلی، سینیٹرز، مشیران رہنماؤں اور کارکنان نے ان کا استقبال کیا۔آصف زرداری کو لینے کیلئے خصوصی طور پر وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی گاڑی ایئرپورٹ پہنچی تھی۔ اس موقع پر سیکیورٹی کے خصوصی انتطامات کیے گئے تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ بلاول ہاؤس میں قیام کے بعد سابق صدر آصف علی زرداری کو علاج کیلئے کراچی کے نجی ہسپتال میں داخل کرایا جائے گا۔ ہسپتال کے اندر اور باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

آصف زرداری

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پیپلز پارٹی کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طاقت کا سرچشمہ صرف عوام ہیں۔ بنیادی حقوق اور جمہوریت پر حملے ناقابل برداشت ہیں۔ ہم آخری دم تک لڑیں گے اور ظلم کے خلاف آواز اٹھاتے رہیں گے۔بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ہمارے حکمران سلیکٹڈ اور کٹھ پتلی ہیں۔ عوامی حکومت ہوتی تو وہ عوام کے لئے کام کرتے لیکن ان کی جانب سے نیب گردی پر زور دیا جا رہا ہے۔چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ ایک سال میں نااہل حکومت نے عوام کے حقوق پر حملے کئے۔ آج کسان اور مزدور سمیت ملک کا ہر طبقہ پریشان ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کو کوئی سلیکٹڈ قبول نہیں ہے۔ ہم نے سلیکٹڈ حکومت کو واضع پیغام دینا ہے کہ طاقت کا سرچشمہ عوام ہے۔ ہم عوامی راج کے لئے آخری دم تک لڑنے کے لئے تیار ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ جمہوریت بہترین انتقام ہے، اس جمہوریت کے لئے بینظیر اور اس کے ورکروں کے قربانی دی تھی لیکن آج نظرآرہا ہے کہ اس پر حملہ ہو رہا ہے۔ اس سال بینظیر شہید کی برسی کو اس جگہ منایا جائے گا جہاں بینظیر کا آخری جلسہ تھا۔ ہم لیاقت باغ میں کھڑے ہوکر بینظیر کا پیغام پاکستان کے نوجوانوں اور غریبوں تک پہنچائیں گے۔

بلاول بھٹو

مزید :

صفحہ اول -