وزیراعلیٰ پنجاب کا ڈاکٹرزکے تحفظ کیلئے قانون سازی کااعلان

وزیراعلیٰ پنجاب کا ڈاکٹرزکے تحفظ کیلئے قانون سازی کااعلان
وزیراعلیٰ پنجاب کا ڈاکٹرزکے تحفظ کیلئے قانون سازی کااعلان

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ ڈاکٹرز کے تحفظ کیلئے قانون سازی کریں گے۔ ہیلتھ پروفیشنلز سکیورٹی بل کو کابینہ کے آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔دنیا نیوزکے مطابق وزیراعلیٰ نے یہ بھی بتاےا ہے کہ پی آئی سی کی ایمرجنسی کھول دی گئی ہے اوردیگرسروسزز بھی جلد بحال کی جائیں گی۔انہوں نے کہا ایمرجنسی کی بندش سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا تھا تاہم اب وہ ڈاکٹرز اور پیرامیڈیکس کے شکرگزار ہیں۔

وزیراعلیٰ سے قبل سربراہ انسٹی ٹیوشن پی آئی سی پروفیسر ثاقب شفیع شیخ نے کہا ہے کہ ایمرجنسی سروس کو جزوی طور پر بحال کیا گیا ہے تاہم مشینری، وینٹی لیٹرز اور ایکو مشینوں کی مرمت اور بحالی میں ابھی وقت لگے گا۔ان کا کہنا تھا کہ ہسپتال انتظامیہ نے بھرپور کوشش کر کے ایمرجنسی بحال کی ہے اور جتنے وسائل ہیں ان کے مطابق سروسز خدمات فراہم کرتے رہیں گے۔

صدر ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پی آئی سی ڈاکٹر اعجاز کھرل نے کہاکہ ڈھائی سو میں سے پچاس بیڈز کو کارآمد بنا دیا گیا ہے۔ایمرجنسی سٹنٹ لیب اور ایکو کارڈیوگرافی کی سہولت بھی مہیا کی گئی ہے تاہم باقی وارڈز کی بحالی میں وقت لگے گا۔

ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ بڑے نقصانات، ٹوٹنے والے بیڈز اور شیشوں کی مرمت اور بحالی میں وقت لگے گا جس کے بعد ہی ہسپتال کے دیگر شعبوں کو مکمل طور پر فعال کیا جا سکے گا۔پی آئی سی کا کے آوٹ ڈور سے مریضوں کو ادویات کی فراہمی بھی شروع کر دی گئی ہے لیکن نئے آنے والے مریضوں کا معائنہ شروع نہیں کیا جاسکا۔ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ آئندہ ہفتے تمام شعبوں کو مکمل فعال کر دیا جائے گا۔

یاد رہے کہ تین روز قبل وکلا اور ڈاکٹرز کے درمیان جھڑپوں کے دوران پی آئی سی میں توڑ پھوڑ کی گئی تھی جس سے چھ افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...