”وکلانے انتقام لینا تھا توڈاکٹرز کو ہسپتال سے باہر نکال کر قبائلی روایات کے مطابق سلوک کرلیتے “، سلیم صافی کی انوکھی منطق

”وکلانے انتقام لینا تھا توڈاکٹرز کو ہسپتال سے باہر نکال کر قبائلی روایات کے ...
”وکلانے انتقام لینا تھا توڈاکٹرز کو ہسپتال سے باہر نکال کر قبائلی روایات کے مطابق سلوک کرلیتے “، سلیم صافی کی انوکھی منطق

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)تجزیہ کار سلیم صافی نے کہاہے کہ اگر وکلاءنے ڈاکٹرز سے انتقام لینا تھا تو ڈاکٹرز کوہسپتال سے باہرنکالتے اور قبائلی روایات کے مطابق ان سے سلوک کرلیتے ۔

جیونیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“میں گفتگو کرتے ہوئے سلیم صافی نے کہا کہ یہ رونا ہم پچھلے سالوں سے رو رہے تھے کہ قانون کا مخصوص نفاذ کریں ، اس طرح اسی قسم کے جتھے وجود میں آجاتے ہیں جس طرح وکلا کاجتھابن گیاہے،اگر ہم نے ملک میں آئین و قانون کا نفاذ نہ کیا تو ہر طبقہ اپنا جتھہ بنالے گا اور اسی طرح انصاف تلاش کرتے پھر یں گے جیسے وکلاءکررہے ہیں۔

سلیم صافی کا کہنا تھا کہ دیکھاجائے تو پتہ چل رہاہے کہ کتنے کتنے بڑے ماہر قانون کسی قسم کی باتیں کررہے ہیں کہ وکلاءاورڈاکٹرز کے ساتھ یکساں سلوک کیاجائے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ڈاکٹرز اٹھ کر کسی بار روم اور عدالت میں گئے ہوں تو ڈاکٹرز پر بھی لعن طعن کرتے ہیں ۔ سلیم صافی کا کہنا تھا کہ وکلاءنے اگر اپنا انتقام خود لینا تھا تو ڈاکٹروں کو باہر نکالتے اور ان کے ساتھ یہ سلوک کرلیتے جیسا کے قبائلی روایات ہیں ، ہسپتال پر بلوہ کیوں کیا ؟

مزید : علاقائی /اسلام آباد