”قانون کی حکمرانی ہم کو بدبخت انگریزدے گئے تھے “تجزیہ کار ایاز امیرنےپی آئی سی حملے پر انصاف کی فراہمی خارج از امکان قراردیدی

”قانون کی حکمرانی ہم کو بدبخت انگریزدے گئے تھے “تجزیہ کار ایاز امیرنےپی آئی ...
”قانون کی حکمرانی ہم کو بدبخت انگریزدے گئے تھے “تجزیہ کار ایاز امیرنےپی آئی سی حملے پر انصاف کی فراہمی خارج از امکان قراردیدی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)تجزیہ کار ایاز امیر نے رول آف لا ہم کو بدبخت انگریز دے گئے تھے ، ہمارا اس سے لینادینا کیاہے؟ اب پاکستان کا اصلی خمیر اور مزاج سامنے آرہاہے ، پی آئی سی حملے پر کچھ نہیں ہوگا ۔

دنیانیوز کے پروگرام ” تھنک ٹینک“میں گفتگو کرتے ہوئے ایاز امیر نے کہا کہ ہمارے نظام میں عدلیہ کے بارے میں لب کشائی بھی نہیں کرسکتے اور ہمارے معززقانون دان وکلاءبھی نظام انصاف کاحصہ ہیں ۔ اس لئے بار اوربنچ سے وکلاءکے لائسنس معطل کرنے اور عدالتوں میں پی آئی سی حملہ کے ذمہ دار وکلاءکے داخلے پر پابندی کی توقع نہیں کی جاسکتی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ تو ان کا داخلہ بند کررہے ہیں جن کے منہ سے تھوڑا بہت سچ نکل گیاہے جیسے اعتزاز احسن جیسے لوگ ہیں۔

ایاز امیر کا کہنا تھا کہ رول آف لا ہم کو بدبخت انگریز دے گئے تھے ، ہمارا اس سے لینادینا کیا ، اب پاکستان کا اصلی خمیر اور مزاج سامنے آرہاہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب تعلیم تباہ کردی گئی  تو یہاں پر لنکن انز کیسے بنے گا ؟ کوئی گڑ بڑہوگی تو پولیس اور انتظامیہ سامنے نہیں آئیگی اورکارروائیاں بعد میں کی جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ قانون دا ن صحیح کہہ رہے ہیں کہ گڑ بڑ ڈاکٹروں نے کی تھی اور معصوم وکلاءکے بارے میں سازشیں میڈیا کررہا ہے ۔

مزید : قومی