آئندہ 4سے 5 ہفتوں کے دوران مزید بارش،برفباری کا امکان

آئندہ 4سے 5 ہفتوں کے دوران مزید بارش،برفباری کا امکان

کراچی(آئی این پی ) محکمہ موسمیات نے آئندہ 4 سے 5ہفتوں کے دوران بارش اور برفباری کے مزید تین سے پانچ سلسلوں کے داخل ہونے کا امکان ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہزارہ ڈویژن، مری، گلگت بلتستان اور کشمیر میں 22.5 انچ تک برف پڑ چکی، موسم سرما کے اختتام تک یہ بڑھ کر50 انچ تک ہوجائیگی۔محکمہ موسمیات کے چیف میٹرولوجسٹ ڈاکٹر حنیف نے برطانوی نشریاتی ادارے کو بتایا کہ پچھلے کئی برسوں کے دوران سردیوں کا دورانیہ انتہائی کم رہ گیا تھا تاہم اس بار ملک بھر میں سرد موسم کا دورانیہ نہ صرف طول پکڑ گیا بلکہ اس کی شدت میں بھی اضافہ ہوا ہے۔اس سے قبل پاکستان میں سردی کا دورانیہ تقریبا دو سے تین ہفتے تک ہی جاری رہتا تھا لیکن اس بار سرد موسم کا ساتواں ہفتہ جاری ہے اور کراچی میں دو ہفتے تک رہنے والا موسم سرما اس بار پانچویں ہفتے میں بھی جاری ہے۔چیف میٹرولوجسٹ ڈاکٹر حنیف کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ اس مرتبہ بارشیں معمول سے 25 سے 30 فیصد زیادہ جبکہ برفباری 50 فیصد زیادہ ہوئی ہے اور آئندہ چند ہفتوں میں بارش اور برفباری کے مزید 3 سے 5 سلسلے متوقع ہیں۔ ڈاکٹر حنیف کا کہنا ہے کہ مالاکنڈ، ہزارہ ڈویژن، مری، گلگت بلتستان اور کشمیر میں 22 اعشاریہ 5 انچ تک برف پڑ چکی ہے اور مارچ میں موسم سرما کے اختتام تک یہ بڑھ کر 50 انچ تک ہو جائے گی۔چیف میٹرولوجسٹ کا مزید کہنا تھا کہ موسم سرما کے دوران مری میں اوسطا 4 فٹ تک برفباری ہوتی ہے لیکن اس مرتبہ مری اور گلیات میں تقریبا 6 فٹ تک برفباری ہو چکی ہے۔دوسری جانب محکمہ موسمیات کے سابق ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر غلام رسول کا کہنا ہے کہ دسمبر 2018 تک منگلا اور تربیلا ڈیم میں پانی کی سطح ڈیڈ لیول پر پہنچ گئی تھی تاہم حالیہ بارشوں سے صورت حال میں کافی بہتری آئی جس کے اثرات فصلوں پر نمایاں ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ رواں موسم سرما کے دوران پہاڑوں پر ہونے والی برف باری نے گزشتہ 70 سال کا ریکارڈ توڑ دیا ہے۔محکمہ موسمیات کی جانب سے فراہم کردہ اعداد و شمار کے مطابق 16 سال بعد کم سے کم درجہ حرارت اس بار اسکردو میں منفی 20 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا اور شمالی علاقوں میں درجہ حرارت اس وقت بھی نقطہ انجماد سے کم ہے۔

موسم

مزید : پشاورصفحہ آخر