قبضوں میں ملوث افسریااہلکار کو اسی تھانے کی حالات میں بند کیا جائیگا ، وقاص نذیر

قبضوں میں ملوث افسریااہلکار کو اسی تھانے کی حالات میں بند کیا جائیگا ، وقاص ...

لاہور (کر ائم رپورٹر) ڈی آئی جی آپریشنز لاہور محمد وقاص نذیرنے کہا ہے کہ کسی بھی ایس ایچ او کے قبضہ میں ملوث ہونے کی شکایت پر سخت ترین کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔قبضوں میں ملوث افسر یا اہلکارکو اسی تھانے کی حوالات میں بند کیا جائیگا۔ایس ایچ اوزاپنی ناقص کارکردگی پر پردہ ڈالنے کیلئے ایف آئی آر درج نہ کرنے کی روش چھوڑ دیں۔ڈویژن بھر میں نیشنل ایکشن پلان کے تناظر میں لاؤڈسپیکر ایکٹ کی خلاف ورزی پر سخت کارروائی کریں۔انہوں نے یہ بات صدر ڈویژن کے انسداد جرائم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ ایس ایس پی آپریشنز لاہور کیپٹن(ر) مستنصر فیروز، ایس پی صدر ڈویڑن سید علی ، تما م ایس ڈی پی او ز اور ایس ایچ او زنے اجلاس میں شرکت کی۔ڈی آئی جی آپریشنز لاہور محمد وقاص نذیرنے صدر ڈویژن کے تمام تھانوں کے ایس ایچ اوز کی گذشتہ ماہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا۔

اورصدر ڈویڑن کے تمام سرکل افسران اور ایس ایچ او زکی کارکردگی کو غیر تسلی بخش قرار دی۔انہوں نے کرائم کنٹرول اور اشتہاری مجرمان گرفتار کرنے کا مطلوبہ ہدف پورا نہ کرنے پر تمام ایس ایچ اوز کو شوکاز نوٹس جاری کرنے کا احکامات جاری کئے۔انہوں نے کہاکہ مسلسل ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ایس ایچ اوز کو تبدیل کر دیا جائیگا۔

ایس ایچ اوز کی کارکردگی کا حساب کتاب ان کی کرائم فائٹنگ کی قابلیت پر ہوگا۔محمد وقاص نذیرنے کہا کہ ٹاپ کرائم والے تھانوں میں نفری پوری کر دی گئی ہے اور ان تھانوں کے سٹاف کو سکیورٹی ڈیوٹی سے مستثنہ قرار دیا جاچکا ہے

لہذا ان تھانون کے افسران اور اہلکار پوری توجہ اور لگن کے ساتھ امن و امان کے قیام اور کرائم کنٹرول کرنے کے لئے اپنی ذمہ داریاں پوری کریں۔انہوں نے ہدایت کی کہ ایس ڈی پی اوز سابقہ ریکارڈ یافتہ اشتہاری گرفتارکرنے کیلئے متحرک اور فعال پولیس افسران کی ٹیمیں تشکیل دیں تاکہ ریکارڈ یافتہ عادی اشتہاری مجرموں کو گرفتار کرکے جرائم کی وارداتوں پر قابو پایا جا سکے۔انہوں نے ایس ڈی پی اوز اور ایس ایچ اوز کو کرائم کنٹرول کرنے کے لئے ایک ماہ جبکہ کیٹیگری بی کے اشتہاری مجرمان پکڑنے کیلئے 10 دن کی مہلت دی۔

مزید : علاقائی