وائلڈ لائف نے جانوروں اور پرندوں کی نیلامی کا طریقہ کار تبدیل کر دیا

وائلڈ لائف نے جانوروں اور پرندوں کی نیلامی کا طریقہ کار تبدیل کر دیا

لاہور( لیڈی رپورٹر)ڈائریکٹر جنرل وائلڈلائف اینڈ پارکس پنجاب لیفٹیننٹ (ر) سہیل اشرف نے کہا ہے کہ صوبہ بھر کے چڑیا گھروں ، بریڈنگ سنٹرزاور وائلڈ لائف پارکس میں موجود جانوروں و پرندوں کے سرپلس سٹاک کی فروخت میں شفافیت کو مد نظر رکھتے ہوئے مروجہ پالیسی میں تبدیلی کر دی گئی ہے اور اب جانور یا پرندے کی سرکاری طور پر مقرر کردہ قیمت فروخت پر "پہلے آئیے ، پہلے پائیے" کی بجائے ان سرپلس جانوروں و پرندوں کی کھلی نیلامی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔انہوں نے یہ بات اپنے دفتر کے کمیٹی روم میں سرپلس سٹاک سے متعلق منعقدہ ایک خصوصی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف ہیڈکوارٹرز محمد نعیم بھٹی، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف پبلسٹی عامر مسعود ، ڈائریکٹر لاہور چڑیا گھرحسن علی سکھیرااور ڈپٹی ڈائریکٹروائلڈلائف سفاری زو لاہور کے علاوہ دیگر متعلقہ افسران بھی موجود تھے ۔

ڈی جی وائلڈ لائف نے کہا کہ نئی پالیسی کے مطابق تمام چڑیا گھر، وائلڈ لائف پارکس اور بریڈنگ سنٹرز کے انچارج صاحبان جانوروں و پرندگان کا سرپلس سٹاک ڈیکلئرکریں گے اور نئے جانوروں کی ضرورت کے حوالے سے ہیڈ آفس کو اپنی ڈیمانڈ پیش کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ سرپلس ڈیکلیئر کئے گئے جانوروں و پرندگان بارے حاصل ہونے والی رپورٹ کی روشنی میں دیکھاجائے گا کہ آیا کہ کسی وائلڈ لائف پارک، چڑیا گھر یا بریڈنگ سنٹر کو تو اس جانور یا پرندے کی ضرورت نہیں۔انہوں نے کہا کہ سرپلس سٹاک مختلف پارکوں وغیرہ کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے شفٹ کیا جائے گا اور صرف اضافی سٹاک ہی فروخت کے لئے پیش کیا جائے گا۔ لیفٹیننٹ (ر) سہیل اشرف نے کہا کہ تمام چڑیا گھروں، وائلڈ لائف پارکس اور بریڈنگ سنٹرز سے حاصل ہونے والی رپورٹس کی روشنی میں جانوروں کے باہمی تبادلے کئے جائیں گے اور اگر پھر بھی کوئی جانور یا پرندہ سرپلس ہوا تو سب سے پہلے سرکاری محکموں کی ضرورت کو ترجیح دی جائے گی

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...