شہر شہر استقبال ‘ تھل ایکسپریس کی پونے دو گھنٹے تاخیر سے ملتان انٹری

شہر شہر استقبال ‘ تھل ایکسپریس کی پونے دو گھنٹے تاخیر سے ملتان انٹری

ملتان(سٹاف رپورٹر)وزیراعظم پاکستان عمران خان کی طرف سے راولپنڈی ملتان کے درمیان چلنے والی تھل ایکسپریس اپنے پہلے روزہی 1گھنٹہ45منٹ کی تاخیرسے ملتان کینٹ اسٹیشن پرپہنچی تاہم ملتان سے صبح سات بجیراولپنڈی کے لئے روانہ ہونے والی تھل ایکسپریس اپنے مقررہ وقت(بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

سے10منٹ پہلیکنڈیاں پہنچ گئی۔جبکہ وفاقی وزیرریلوے کیمظفرگڑھ سے سوارہونے کے شیڈول کیباعث ملتان سے راولپنڈی کے لئے جانے والی مہرایکسپریس کو 1گھنٹے تاخیرسیملتان کینٹ اسٹیشن سے روانہ کیاگیا کروڑاسٹشن پرممبرقومی اسمبلی شبیرقریشی کے مطالبہ پرپہلے ہی روزتھل ایکسپریس کو2منٹ کاسٹاپ دے دیاگیا۔بتایاجاتاہے کہ ڈویژنل سپرٹننڈنٹ ریلوے امیرمحمدداؤدپوتانیڈویژنل افسران کے ہمراہ وفاقی وزیرریلویکاکنڈیاں اسٹیشن پراستقبال کیااس موقع پرتحریک انصاف اورعوامی لیگ کے کارکنوں اورمقامی رہنماؤں کی بڑی تعدادبھی موجودتھی ممبرقومی اسمبلی شبیرقریشی بھی وفاقی وزیرکے ہمراہ تھیکنڈیاں کے بعدٹرین کابھکرمیں بھی پرتپاق استقبال کیاگیاتاہم جب ٹرین کروڑاسٹیشن پرپہنچی تووہاں موجودتحریک انصاف کے کارکنوں اورشہریوں کی بڑی تعدادکودیکھتے ہوئے ممبرقومی اسمبلی شبیرقریشی کے کہنے پروفاقی وزیرنے ٹرین کوروکادیااورریلوے انتظامیہ کوکروڑاسٹیشن پرٹرین کو2منٹ سٹاپ دینے کی ہدایت بھی ساتھ ہی کردی اسی طرح ٹرین کے لیہ،کوٹ ادو،مظفرگڑھ پہنچنے پربھی والہانہ استقبال کیاگیاتحریک انصاف اورعوامی تحریک کے کارکنوں نے عمران خان زندہ باد،شیخ رشیدزندہ بعدکے نعریلگائے۔ذرائع کے مطابق راستے میں مختلف اسٹیشنوں پروفاقی وزیرخطاب کرتے آئے جس کی وجہ سے ٹرین اپنے مقررہ وقت5بجیکی بجائے1گھنٹہ 30منٹ کی تاخیرسے مظفرگڑھ پہنچی جہاں سیشیخ رشیدنے5بجکر5منٹ پرراولپنڈی جانے والی مہرایکسپریس کے ہمراہ واپس روانہ ہوناتھاتاہم تھل ایکسپریس کے دیرسے پہنچنے کی وجہ سے ملتان سے مہرایکسپریس کو1گھنٹہ کی تاخیرسیروانہ کیاگیاتاکہ وفاقی وزیراس میں سوارہوسکیں ٹرین مظفرگڑھ اسٹیشن پراپنے مقررہ وقت5بجیکی بجائے6بجکر30منٹ پرپہنچی ٹرین کے ملتان سے تاخیرسے روانہ ہونے اورتاخیرسے مظفرگڑھ پہنچنے پرمہرایکسپریس کے مسافروں نے ناگواری کااظہارکیاجبکہ تھل ایکسپریس کے مسافروں نے ٹرین کی بحالی پرخوشی کااظہارکیا۔ وزیر ریلوے شیخ رشید احمد مظفرگڑھ مختصر قیام کے بعد مہر ایکسپریس کے ذریعے واپس راولپنڈی روانہ ہو گئے۔ ان کے ہمراہ ڈی ایس ملتان امیر محمد داؤدپوتا، ڈویژنل افسران ایس پی شاہد نواز اور سکیورٹی کے لئے 15 کمانڈوز بھی موجود تھے۔ وزیر ریلوے کو مظفرگڑھ کے راستے راولپنڈی روانہ کرانے کے لئے مہر ایکسپریس کو 1 گھنٹہ 50 منٹ تک ملتان سٹیشن پر روکے رکھا۔ ذرائع نے بتایا کہ چند ریلوے سٹیشنوں پر وزیر ریلوے سے شجرکاری کے لئے پودے بھی لگوائے گئے۔ عملہ نے پودوں کے بجائے درختوں کی ٹہنیاں کاٹ کر انہیں پودوں کی جگہ لگایا گیا۔ مظفرگڑھ ریلوے سٹیشن کے باہر عارضی ملازمین نے احتجاج کیا جن کا کہنا تھا کہ عرصہ دو سال سے ریلوے میں عارضی بنیادوں پر کام کر رہے ہیں لیکن انہیں مستقل نہ کیا گیا۔ دریں اثناء ڈی ایس اور ان کے افسران نے وزیر ریلوے کو کندیاں تک الوداع کر کے واپس ملتان روانہ ہو گئے۔کینٹ ریلوے سٹیشن سے راولپنڈی کے لئے تھل میانوالی ایکسپریس صبح 7 بجے روانہ کی گئی۔ ذرائع کے مطابق مذکورہ ٹرین میں پرانی کوچز کی تزئین و آرائش کر کے انہیں چلایا گیا۔ ٹرین روانگی کی تقریب میں ڈپٹی ڈی ایس صائمہ بشیر و دیگر افسران شریک تھے۔ریلوے کے چیف ایگزیکٹو آفیسر آفتاب اکبر وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کو مظفرگڑھ میں الوداع کرنے کے بعد ملتان کینٹ سٹیشن پر آ گئے اور بعدازاں تیزگام کے ذریعے کراچی اپنے گھر روانہ ہو گئے۔

تاخیر

Ba

مزید : ملتان صفحہ آخر