بیٹی کی بازیابی کیلئے والدین نے لاہورہائی کورٹ سے رجوع کر لیا

بیٹی کی بازیابی کیلئے والدین نے لاہورہائی کورٹ سے رجوع کر لیا

لاہور(نامہ نگارخصوصی) پہلے سے دو بیویاں رکھنے والے شہری کے ساتھ گھر سے بھاگ کر شادی کرنے والی19سالہ لڑکی کی بازیابی کے لئے اس کے والدین نے لاہورہائی کورٹ سے رجوع کرلیا۔عدالت عالیہ نے اس سلسلے میں مومن شہزادی نامی لڑکی کے والدین کی درخواست پر متعلقہ پولیس کو حکم دیاہے کہ لڑکی بازیاب کر کے 18 فروری کو پیش کیا جائے۔درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ انہوں نے اپنی بیٹی کو گھر سے بھگانے والے ساجد کے خلاف تھانہ باغبانپورہ میں مقدمہ درج کروایا، باغبانپورہ پولیس نے بتایا کہ مومن شہزادی نے 9 فروری کو ساجد نامی شخص سے پسند کی شادی کی ہے،ساجد نے ہماری بیٹی کو دھوکہ دے کر علاقہ جوہر ٹاون میں 9 فروری کو نکاح کیا ، ساجد ہماری بیٹی کو شادی کا جھانسہ دے گھر سے بھگا کر لے گیا ، ساجد پہلے سے دو شادیاں کر چکاہے، وہ نشہ کا بھی عادی ہے ،ملزم ساجد نے احاطہ عدالت میں ہماری خواتین کو تشدد کا نشانہ بنایاتھا،درخواست میں مومن شہزادی کی بازیابی اورملزم کے خلاف کارروائی کا حکم جاری کرنے کی استدعا کی گئی ہے ۔

دھوکہ

مزید : صفحہ آخر


loading...