پائلٹس کی بھرتیوں کیلئے خواتین کا کوٹہ نظر انداز کرنے کیخلاف پی آئی اے کی انٹرا کورٹ اپیل کی سماعت

پائلٹس کی بھرتیوں کیلئے خواتین کا کوٹہ نظر انداز کرنے کیخلاف پی آئی اے کی ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس مامون رشید شیخ کی سربراہی میں قائم ڈویژن بنچ نے پی آئی اے میں پائلٹس کی بھرتیوں کے لئے خواتین کا کوٹہ نظر انداز کرنے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ کے سنگل بنچ کے فیصلے کے خلاف پی آئی اے کی انٹرا کورٹ اپیل کی سماعت پی آئی اے کے وکیل کی عدم پیشی کے باعث ملتوی کرتے ہوئے حکم دیا کہ خاتون پائلٹ کی بھرتی کا عمل جاری رکھا جائے اور آئندہ سماعت پر فریقین کے وکلاء دلائل دیں ،ہائیکورٹ کے سنگل بنچ نے خاتون کو پائلٹ بھرتی کرنے کا حکم دیا تھا جس کے خلاف یہ انٹراکورٹ اپیل دائر کی گئی ہے ،پائلٹ بھرتی ہونے کی خواہش مند خاتون کومل ظفر کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ قومی ائیر لائن میں خواتین پائلٹ کی بھرتی کے لئے10 فیصد کوٹہ مختص ہے تاہم پی آئی اے کے جانب سے کوٹہ پالیسی کو نظر انداز کیا گیا اور میرٹ پر پورا اترنے کے باوجود بھرتی نہیں کیا گیا ،خاتون کے وکیل نے کہاکہ لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کرنے پر عدالت عالیہ نے خاتون پائلٹ کو بھرتی کرنے کا حکم دیا تھا تاہم عدالتی احکامات پر خاتون کی بھرتی کا عمل شروع کر دیا ہے وکیل نے قانونی نقطہ اٹھایا کہ قومی ائیر لائن کی سنگل بنچ فیصلے کے خلاف انٹراکورٹ اپیل غیر قانونی ہے جسے خارج کر کے عدالت بھرتی کا عمل مکمل کرنے کا حکم دے ،قومی ائیر لائن نے اپنی اپیل میں موقف اختیار کررکھاہے کہ 10 فیصد کوٹہ کا اطلاق پائلٹس پر نہیں ہوتا ،سنگل بنچ کا فیصلہ حقائق کے برعکس ہے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...