قائمہ کمیٹی قومی صحت ،ادویات کی قیمتوں میں اضافہ مسترد ،وزیراعظم کو ہیلتھ اتھارٹی کی تشکیل کی سفارش

قائمہ کمیٹی قومی صحت ،ادویات کی قیمتوں میں اضافہ مسترد ،وزیراعظم کو ہیلتھ ...

اسلام آباد(آئی این پی)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے قومی صحت نے ادویات کی قیمتوں میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے وزارت کی جانب سے کابینہ کو دی گئی بریفنگ طلب کر لی کمیٹی نے وزیراعظم سے سفارش کی ہے کہ جلداز جلد ہیلتھ اتھارٹی کی تشکیل دی جائے ۔تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی قومی صحت کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر عتیق شیخ کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہاوس منعقدہوا۔اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے آئی جی پولیس نے بتایا ڈاکٹروں اور کلینک کی چیکنگ کیلئے پولیس چھاپے نہیں مار سکتی۔سینٹرمہر تاج روغانی نے کہا کہ ملک میں عطائی اور پیرامیڈیکس کا عملہ بھی ڈاکٹر بن کر مریضوں کا علاج کر رہے ہیں۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ عطائی ڈاکٹر سے کوئی بندہ مرجائے تو وہ قاتل ہے۔عتیق شیخ نے کہا ہوٹلز پارکس سے شیشہ ختم ہونے سے ایلیٹ کلاس کے گھروں میں چلا گیا ہے۔کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہو ئے سیکرٹری صحت سے بتایا 18ویں ترمیم کے بعد صحت کا شعبہ صوبوں کے پاس چلا گیا لیکن بعد میں وزارت بنانے کے بعدہمیں فیڈرل کے ہسپتال اور ڈی ایچ او وزارت کے ماتحت کی گی۔صوبوں میں ہیلتھ کمیشن بنائے ہیں اب وفاق کی سطح پر بنایا جا رہاہے اس کیلئے 30 رکنی سیلیکشن کمیٹی کمیشن کا چناو کرئے گی جس پر کمیٹی نے وزیراعظم قومی صحت کمیشن کے قیام کا اعلان کریں ۔تاکہ جعلی ڈاکٹروں جعلی کلینکس اور ادویات کا خاتمہ ہو سکے آئی جی پولیس نے کمیٹی کو بتایا پمز ہسپتال سے جعلی ڈاکٹر کو گرفتار کیا یے کوئی ایس ایچ اوقانون کے لحاظ سے ڈاکٹر کے پاس نہیں جا سکتا البتہ ڈرگ اتھارٹی کے کہنے پر جا سکتے ہیں ۔ ڈرگ اتھارٹی حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ اسلام آباد سے 4 جعلی ڈاکٹرز پکڑے ہیں قانون کے مطابق ان کی سزا2000 روپے جرمانہ اور 2سال قید سزا ہے۔ وزیر صحت عامرکیانی نے کمیٹی کو بتایا صحت کمیشن وزارت قانون کی جانب سے جلد مل جائے گا جسے کابینہ میں پیش کیا جائے گا۔

مزید : صفحہ آخر